Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2017 » September (page 3)

Monthly Archives: September 2017

غزل ۔۔۔ وصاف باسط

مہتاب فضا کے آئینے میں دیکھا تھا خدا کے آئینے میں تم خواب سے دو قدم نکل کر چھپ جاؤ دعا کے آئینے میں گہرائیاں ناپتا رہوں گا دیکھوں گا خلا کے آئینے میں اس پیڑ کا ڈر بتا رہا ہے طوفان ہوا کے آئینے میں چہرا ہے مگر طلسم جیسا چھپ جائے ڈرا کے، آئینے میں چل خواب سمیت ...

Read More »

غزل  ۔۔۔ ثانی خان

خواب ممکن نہیں تعبیر بغیر ڈر کا چہرہ کسی تصویر بغیر کرب اشعار کے سانچے میں بھلا آپ ڈھل سکتا ہے تدبیر بغیر سوچ مانندِ سلاسل ہے مگر قید ممکن کہاں زنجیر بغیر ذکر منصور کا ہو یا جالب دار پہنچا نہیں تشہیر بغیر سن کے اشعار وہ یہ کہتے ہیں ثانی موجود ہے ؟ تحریر بغیر

Read More »

غزل ۔۔۔ دلاورعلی آزر

زمین اپنے ہی محور سے ہٹ رہی ہوگی وہ دن بھی دور نہیں زیست چھٹ رہی ہوگی بڑھا رہا ہے یہ احساس میری دھڑکن کو گھڑی میں سوئی کی رفتار گھٹ رہی ہوگی میں جان لوں گا کہ اب سانس گھٹنے والا ہے ہرے درخت سے جب شاخ کٹ رہی ہوگی نئے سفر پہ روانہ کیا گیا ہے تمہیں تمہارے ...

Read More »

کلامِ جوآں سال ۔۔۔ زرک بگٹی

ساہ گوں سرا پھاذار نئیں مال گوںْ مغیمیں مڑدماں شاہ زور و ورنائی وہی داں دبرا دستہ نیئے دَنتھانا مڑد بے وذتیں طعامہ وَرغ پہ لَزتیں دنتھان کہ نئیں نے مں دفا یہ سی او دوئیناں صفا نندی ثو چاپینی دفا صحوا دں تاریکیں شفا پہ حیلہ ہاں پلی سخا Zarak Bugti Soul is ne long lasting with body Fortune ...

Read More »

غزل ۔۔۔ اورنگ زیب

آکر عروج کیسے گرا ہے زوال پر حیران ہو رہا ہوں ستاروں کی چال پر اک اشک بھی ڈھلک کے دکھائے اب آنکھ سے میں صبر کر چکا ہوں تمھارے خیال پر آ آ کے اس میں مچھلیاں ہوتی رہیں فرار ہنستی ہے جل پری بھی مچھیروں کے جال پر مایوس ہو کے دیکھنا کیا آسمان کو اْڑنے کا شوق ...

Read More »

میں نے شنگار چھوڑ دی ۔۔۔ ناز بار کزئی

اس پل کے احساس میں کہ کب کرب کی لہروں میں کچوکے لگاتے اک ڈوبتے تیراک کی طرح .. جو اندر ہی اندر وصال کے اک تنکے کے سہارے اپنی روح تک پہنچ پائے… ہاں اب میں نے شرنگار چھوڑ دی. اب شرنگار اس دن ہوگا جب صبح کا روشن سورج اپنی روشن لہروں کو میری روح میں نچھاور کردے… ...

Read More »

طاقت ۔۔۔ ثبینہ رفعت

تنہائی تو پہلے ہی اپنے گھر کہ ملکہ تھی اس عالم جنوں نے پھر محفل میں بھی تنہاکیا انجمن میں تنہا کرنے کا کمال فقط تم کو آتا ہے ہاں آئے عشق فقط تم کو آتا ہے

Read More »

غزل  ۔۔۔ شہاب اکرم

اھگا روچ، ماہا دریا نہ کناں ندگی من تراہمرہ نہ کناں شْت کنئے نوں تو ترا اجازت اِنت بے وفا راستے کہ وفا نہ کناں نان سرتگیں ہرکسادست کپیت ما پہ ایشیاوتا رسوا نہ کناں دل پہ وتئی محرماں زہیریگ اِنت من گنوگا اے نو ملما نہ کناں چونیں دورے کہ مئے سرا اتکگ چوراں کس وتی ہمراہ نہ کناں ...

Read More »

زندگی اپنے آج میں زندہ رہتی ہے ۔۔۔۔ نور محمد شیخ

نثری نظم محبت کرنے والے لوگ جو دنیا چھوڑ چکے اُن کو ، یاد کرکے دل دُکھی نہ کرو ماضی کے سُہانے ادوار یکے بعد دیگرے مِٹ چکے اُن کو ، یاد کرکے دل دُکھی نہ کرو یاد رہے، اے نور زندگی، اپنے آج میں زندہ رہتی ہے اور ، آگے کی جانب سفر کرتی ہے

Read More »