Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2017 » May (page 3)

Monthly Archives: May 2017

منتظر ۔۔۔ احسان اصغر

کبھی بہتے پانی پہ تم نے بھڑکتی ہوئی آگ دیکھی ؟ کبھی تم نے سورج میں پڑتے ہوئے بے تحاشہ بھنور اپنی آنکھوں کے شفاف عریانیوں میں اتارے؟ تمہارے لیے اجنبیت ہے! چاروں طرف پھیلتی دھند میں۔۔۔ہو گی !۔ لیکن مرے آئنے میں تو منظر کا منظر چمکتی ہوئی دھوپ ایسا نکھرتا ہوا ہے میں تجرید کے بیکرانے میں یوں ...

Read More »

سلسلۂ روز و شب ۔۔۔ وحید زہیرؔ

تو دہ گِرا کوہسار سے کانکن بیچارے دب گئے اور ایک عمارت گِر گئی زخمی ہوئے کچھ مر گئے سیلاب بھی آیا یہاں گاؤں کے گاؤں مِٹ گئے کل پھر کوئی ٹارگٹ ہوا افسر تھا یا قانوں داں تھا انجینئر اغوا ہوا خودکش دھماکے میں کئی ملبے اڑے لاشیں گریں پولیس سے مڈبھیڑ میں ڈاکو تھے دہشت گرد تھے سب ...

Read More »

کسانی  ۔۔۔۔ مومن مزارؔ

تو انچو دور رپت ئے کہ پر تئی گدا رے آ نوں من تلو ساں روچ و شپ منی ساہ ئے کپ پہ کجام نیمونا نوں بیایاں تئی گورا دریگتیں کسانی بیا تکیں دوبر او ما ؤ تو گڈکی لیب کُتیں

Read More »

محمدرفیق مغیری بھاگ

دیم تھئی استیں گلاب جانی جگا ما تھئی نیستیں جواب جانی چانڑ دہی ما ہا شہ شر تراست ئے تھؤسُنڑاایں است ئے نواب جانی دل ئے دِری پھغ تھئی نا ما گوایں ذکر تھئی استیں ثواب جانی تھئی عشق ئے آس اندرا برغیں دل سُتغو بیزا کباب جانی گریزو گریزو ایوکھی آما ہُشک بیزغاں چمیں آب جانی ساھ مُشت بی ...

Read More »

شفیق شخصیت کی یاد  (عبداللہ جان جمالدینی) ۔۔۔ نور محمد شیخ

مئی کا مہینہ لوٹ آیا آٹھ تاریخ بھی آکر گزر گئی لیکن اس بار اپنی سالگرہ پر ماما جمالدینی صاحب اپنوں کے درمیان نہیں تھے اُن کی کرسی خالی تھی اُنہوں نے کیک بھی نہیں کاٹا ایسا پہلی بار ہوا!۔ جب وہ دنیا میں تھے تب سب کے درمیان تھے ان کی دل پذیر اور مخلصانہ مسکراہٹ سچائی کی مٹی ...

Read More »

وقت ۔۔۔ نذرِ فیض ۔۔۔۔ امداد حسینی

دس منٹ وقت ملا ہے ہم کو بولنے کے لیے یہ وقت ملا ہے ہم کو جس دیا وان نے یہ دان دیا ہے اس کو خبر کو ہم تو دعاؤں کے سوا کچھ بھی نہیں دے سکتے (کبیرا کھڑ بجار میں، سب کی مانگے کیر ناکا ہو سے دوستی، نا کاہو سے بیر!) بولنے کے لیے جو وقت ملا ...

Read More »

میں آزاد ہوں ۔۔۔ عابدہ رحمان

اپنی سوچ کی غلاظتوں کی کڑی سے کڑی کو جوڑے تم جو اک زنجیر میں مجھ کو مقیدکئے ہوئے ہو تو یہ سن لو!۔ پدرسری کے سفیرو میں آزاد تخلیق ہوں سانس لیتی ہوئی اک زندہ جان ہوں تم جو یہ بساط بچھائے ہوئے ہو رسموں، رواجوں کے میں یہ سب سمیٹ لوں گی مجسمِ حیرت ہوں میں ہر لمحہ، ...

Read More »

بلا عنوان ۔۔۔ آمنہ ابڑو

“مما، لگتا ہے آج بھی ماسی نہیں آئے گی۔۔۔۔” فضا، میری بڑی بیٹی سخت بیزاری کے عالم میں بڑبڑاتی میرے کمرے میں داخل ہوئی، اس کے ہاتھوں میں پکڑے ٹرے میں قہوے کا کپ دیکھ کر میں پیار سے مسکرا دی۔ “تھینک یو فجنی”۔۔۔۔ “مما” قہوے کے گرم کپ کو مجھ سے دور رکھنے کی کوشش کرتے کرتے اْس نے ...

Read More »

وئیل ۔۔۔  لوہسون/مسرؔ ورشاد

منا شش سال بیت کہ شہ بنجا ہا آتگوں۔ من اے درنیاما نام گپتیں ریاستی معاملہانی باروا بازویست واشکت ۔بلیں منا یک چیزے آہم اثر مندنہ کرت ۔ بلکیں من گشت کنیں کہ منی بے تہمبلی اِش گیش کرت و پہ راستی منا شہ انسانی سیمیسراں ہما دیم اِش کرت۔ البت یک سرگو ستے آمنا شہ بے تہمبلی آ ہمنکہ ...

Read More »