Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2017 » May (page 2)

Monthly Archives: May 2017

قطعہ ۔۔۔ ڈاکٹر منیر رئیسانی

تیری سچائی کی دیتی تھی گواہی ہر دم میری انگشتِ شہادت، جو شکستہ ہوئی ہے کثرتِ کذب و دیا کوچہ و بازار کے بیچ میری بے لوث عقیدت ، جو شکستہ ہوئی ہے مردا ن کے مشعال خان کے لیے ۔ جس کی ماں نے کہا کہ ’’ میں نے اُس کے ہاتھ چومے تو اس کی انگلیاں ٹوٹی ہوئی ...

Read More »

کل ۔۔۔۔ حبیب حسین حبیب

اِک دن سمندر کے کنارے شام کو استادہ پانی کو تکتا جارہا تھا میں اچانک میری نظریں ڈوبتیں سُورج پہ جا ٹھہریں تو دوڑا میں پیلے روغنی پانی میں دوڑا دُور تک سُورج بچانے کو مجھے جب ہوش میں لایا تو پوچھا مجھ سے ملاح نے کہ تم نے خودکشی کیوں کی کہا میں نے نہیں میں خودکشی کرتا میں ...

Read More »

فد اموسیٰ

سرگپتگاں جھانا پدا بے سما کناں بازارا عشق ئے سرباں حسنا بھاکناں حاجت نہ انت جھان ئے منا ھست نیستی ئے تو بے منی وڑا من وتا تئی وڑا کناں سر کش ئے تو چہ کُلا جھان روژناہ بیت اے میتگے گلابے پُل تئی ہم ستا کناں آماہ لقا او ماہ گل او ماہ دیما چو بگش تو کہ دراتکگے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ فرزانہ رفیق

اخدرز یبا ارے داز ندگی دنیا ٹی درپہ درارے دا زندگی حِچ قیمت اف دانا کستون داڑے ولے ہم تو خوار ارے دا زندگی پھولاتان بازارے اور زیبدار پیتا تے ٹی تار تارارے دازندگی خوشی تا جمراس مرے او نازی آ انتئے غم تا شکار ارے دا زندگی تفا کنے داخس دلاسہ نی فرزانہ نن تے ٹی نے توارارے دا ...

Read More »

غزل  ۔۔۔ بارکوال میاخیل

دھول ہے اور زندگی تک راستہ پْرخار ہے اس لئے اس سے نبھانا عشق بھی دشوار ہے کیا عجب، بے خوف ہم خوابوں کی وادی میں ملیں کون سی جنت ہے یہ جو بے در و دیوار ہے دل میں سڑ جائیں گے بکنا ہے تو بس نہ صبر کر آ چلیں اب حسرتوں کا گرم ہی بازار ہے لٹ ...

Read More »

شوکت توکلی بلوچ

کھسوے ڈْکئے جھوئثوں نوخیں سنگتیں مڑدم گوش دیاں گِفتغاں عشقئے چابْکیں زھما دْبرا گڑداں پھز نیاں ڈوبرا آسے روکثوں چھوشیں من چھرگے دڑداں جاہ دیاں منی لاغریں بْتا بولکے بستیش اے سانوڑی بشام بنت رِشاں برائینتو اشتوں جند وثی دستاں چھوں پھزا ہے ہے من د کھناں سمبری دڑدےء4 ونڈغا کھسے ھر دمِ جکاں گوانک جناں یا ھدا سند کفی ...

Read More »

دولت اور غربت اور بیچ کا ناچ گھر ۔۔۔ کاوش عباسی

کچھ میرے بائیں بازو کے دوست نطق پر ، ذہنوں میں اِن کے دُنیا کا ہر تجزیہ اور ہر تجزیہ ٹھیک، سچاّ مگر خوں میں اِن کے حرارت نہیں آگ جلتی نہیں ہے خلاف اِتنی دَولت کے دیوں لُوٹی ، ماری ہوئی) حقِ میں غُربت کے (یوں کچلی ، نُچڑی ہوئی) ہاں یہ اَقوام اور اَزمَنہ، فکریات و مذاہب، سیاسی ...

Read More »

نامعلوم یادیں ۔۔۔ کشور ناہید

میں بنک میں لاکر زر روم کی جانب بہت سی امیرعورتوں کو جاتے ہوئے دیکھتی رہی ہوں آج میں نے سوچا چلو میں بھی ذرا اندر جاکر دیکھوں اس وقت لا کر زروم میں کوئی بھی نہ تھا بہت سے صندوق نما بکسے الماری ہی لگے تھے جن میں تالے لگے ہوئے تھے ایک بکسے پہ رنگ اترا ہوا تھا ...

Read More »

رائیگانی  ۔۔۔  وصاف باسط

وہ حویلی سے آسمان کی طرف دیکھتی رہتی ہے میں دیواروں سے اس کی خبر لیتا ہوں یہ اونچی دیواریں جو مجھے اس کی خبر دیتی ہیں یہ وقت کا گھاؤ ہیں یہ چیخوں سے بھری ہوئی ہیں وہ چیخیں جو اس میں دبی ہوئی ہیں وہ مجھ میں سمو جاتی ہیں میں دور بیٹھا اس کے پاس جانے کے ...

Read More »