Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2017 » April (page 4)

Monthly Archives: April 2017

غزل ۔۔۔ مندوست بگٹی

مئیں عیب اُگھاڑائیں دیتؤ دل دوستا اژماں شہ زھر کثہ آں درشک کہ سُھریں لعل و بَرث، یکباروی اژماں شہ بہرکثہ من جھولے انٹرزی یئے زُرتؤ ، نذرانہ دیما پیش داشتہ بے دڑدا دِیر گوں تیلا نکاں، اُمیدمئیں سِستؤ قھر کثہ مئیں بے وس و بے واکیں روح ئے ، ارمانانی وث خون کُثئی روشے تہ گُشی کہ من بے ...

Read More »

ثبینہ رفعت

وحدت کیوں نہ خدا مانوں تمہیں اتنا دور ہوکے بھی ساتھ ساتھ رہتے ہو فراخدلی دشمنوں کی بھیڑ میں اک پل نہ ہمسفر رہا میں نے جس کے ہاتھ میں زندگی بھر کا اثاثہ دے دیا سراب اب لوگوں سے بھی ملتے ہیں سگریٹ چائے اور قلم ہے زوروں پر۔ موسیقی کی محفل بھی رات گئے تک چلتی ہے جام ...

Read More »

فوسل  ۔۔۔۔ احمد شہریار

یاد ہے؟ جب میں نے ایک بچے کی طرح تمہاری طرف ہاتھ پھیلائے تو تم نے کچھ کہا اور میں اچانک ہزاروں سال بوڑھا ہوگیا اس فوسل کی طرح جسے یاد بھی نہیں کہ وہ کہاں جیا اور کیسے مرا؟!

Read More »

غزل ۔۔۔ کاوش عباسی

کچھ نہ کچھ کہہ خفا تو کر ہی دیا تم نے ہم کو جدا تو کر ہی دیا کچھ دنوں کا جنوں سہی، ہم نے حَقِ اُلفت اَدا تو کر ہی دیا نامِ اُلفت ہمارے جینے کو آپ نے اِک سزا تو کر ہی دیا شوق نے تیرے، میرے جیون کے راستے کو ہَرا تو کر ہی دیا موم تھا ...

Read More »

غزل ۔۔۔ زاہد راہی

موسم چو وترا بدل نکاں تو کتا دل چو آس و جل نکان تو کتا ھو اڈئے ذمانگ تو رنگ ذرتہ پہ وت درچک وتی تاکاں پشل نکان تو کتا مرچی ذمانگئے رندا کپتگ ئے بے سماہ باندا کس وتی جیگا تل نکان تو کتا اپسوذ نت منا تو چہ ذندگیا بیزارئے چوکس پہ مَرگا گل نکان تو کتا راھی ...

Read More »

جہاں گرد ۔۔۔  رخسانہ صباؔ

(طویل نظم سے اقتباس) جہاں گرد!۔ سفّاک ظلمت کے پردے میں رقّاصۂ شب تھرکنے لگی ہے کوئی بے رِدا ہے یقینا جوان گھنگھروؤں کی صدا میں سسکنے لگی ہے مگر میں تو اپنی ہی وحشت میں گم ہوں مجھے ایسا لگتا ہے میں اپنی آنکھیں گرا آئی ہوں اور مرے خواب رستے میں گم ہوگئے ہیں مگر ایسا کب ہے ...

Read More »

سلویا پلاتھ/ نگہت سلطان

بیوہ۔ بیوہ۔ یہ لفظ اپنے آپ میں تباہ کرتا ہے سلگتے ہوئے اخبار کے ورق کی طرح یہ جسم ایک لمحہ ٹہرا ہوا، ہوا میں معلق سرخ نظارے پر کھولتا ہوا، ایک دل جسے وہ ایک اکلوتی آنکھ کی طرح نکال ڈالے گی۔ اس کی قربت کا ایک اور موقع ایک کاغذی پیرہن دل پر رکھا ہوا جس طرح اس ...

Read More »

بے اولاد عورت ۔۔۔ سلویا پلاتھ/ نگہت سلطان

کوکھ!۔ اور اسکے پود کی شورش چاند درخت سے جدا ہوکر بے سمت ہوگیا ہے میری زمین ایک بے لکیر ہتھیلی تمام راستے سمٹ گئے ایک گرہ میں اور میں اپنے آپ میں ایک گرہ مجھے تم نے حاصل کیا: ایک جسم ہاتھی دانت میں مکڑی کی طرح آئینے بنتی رہی کسی بچے کی چیخ کی طرح نامناسب اپنے عکس ...

Read More »

 پروین ملال/ بارکوال میاخیل

ترجمہ پشتو ادب سے بیوہ میرے شوہر کو مَرے مجھ سے بچھڑنے کو اب چار ماہ دس دن ہی گزرے ہیں سبھی امی نے مجھ کو بتایا کل رات: پہننا بھول اب رنگین کپڑے اونچی آواز سے بولنا نہیں حویلی میں لبوں کو خشک رکھنا زلفوں کو بھی نہ سنورنا ابھی لکیر کھینچ لو دائیں جانب روزنِ در سے نہ ...

Read More »

اوورٹائم ۔۔۔ س۔ م ۔ساجد

آج سویرے ہی شیفالی کی آنکھ کھل گئی اور اس کے کانوں میں جب چاروں طرف سے فجر کی اذان کی آوازیں سنائی دینے لگیں تو کمرے میں تاریکیوں کا بسیرا بھی ختم ہوتا محسوس ہونے لگا۔ اب کچھ ہی دیر میں روشنی کی کرنیں بانس کی چٹائی سے بنی ہوئی دیواروں سے چھن چھن کر کمرے میں آنے لگیں ...

Read More »