Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2016 » December

Monthly Archives: December 2016

ماما خدائیداد صاحبی ۔۔۔ نوشین قمبرانی

خَستہ حال کمرے میں پڑی اک چارپائی پر تمہارا زندگی کے قد سے بھی اونچا سراپا سامنے میرے پڑا تھا، ہنی لوشن سے پاؤں چرپ کرنے کو تمہارے پَیر اپنی گود میں لے کر جو بیٹھی یوں لگا جیسے تَپِش سے زندگی کی لَوئیں اْٹھتی ہیں۔ جو اب بھی جِھلمِلاتی ہیں اْنہی اَشکوں کی لڑِیاں ہیں، جو تیرے لَمس کی ...

Read More »

اے دل، تُمہیں زندہ رہنا ہے ۔۔۔ اے دل، دیکھو

نثری نظم ہر طرح کے نا مُساعد حالات میں تمہیں زندہ رہنا ہے حوصلہ مندی کے ساتھ مُستقل مزاجی کے ساتھ اور، بڑی خوش دلی کے ساتھ اور ، اے دل تیری ہستی کو تیری اچّھائی کو میں خوب پہچانتا ہوں اسی لیے کہتا ہوں: تمہیں زندہ رہنا ہے زندگانی میں سچّے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اور بعد از ...

Read More »

انسان دوست بنیں ۔۔۔ نور محمد شیخ

نثری نظم شاعر کا کام: غزل تخلیق کرے افسانہ و ناول نگار فِکشن تخلیق کرے نقّاد ، تنقیدی مضامین لکھے اور ایک عالم، روشن خیال کتابیں تصنیف کرے یعنی لکھنے والوں پہ فرض ہے وہ بہت اچھا لکھیں: عالِمانہ، بھرپور اور گہرے خیالات زندگی بخش اور امّید سے بھرے ہوئے اشعار، نظمیں، جُملے اور اقتباسات پھر، اب ، یہ پڑھنے ...

Read More »

واجہ ماما عبداللہ جان جمالدینی ۔۔۔ لطیف الملک بادینی 

(۸مئی ۱۹۲۲ ۔ ۱۹ ستمبر ۲۰۱۶) بابائے بلوچی گلُین ماما عبداللہ جان شتئے اِشتئے مار ا بردا گوں گمان تئی پُر مہر و زبادین گپ و گال دات ا نت مارا وس و جان تئی زند ئے جاور پما یک قندیلئے روژنا کنت پما تہارین شپان تئی دیمرئی پسندین پِکر و سسا ھرکشا چو وشبوئے بوتگنت تالان اَتئے تو مئے ...

Read More »

ماما پروفیسر عبداللہ جان جمالدینی کے لیے ۔۔۔ علی بابا تاج

ماما اپنے ایک صدی تھے پیر تھے وہ دانش کے اور داعی تھے پر چارک تھے امن اور سچے جذبوں کے درد کو سانجھا کہتے تھے وہ خواب اور آدرش سیکھے ہم نے اُن کے مشفق دریا جیسے لہجے سے لفظ کی حرمت سیکھی ہم نے کیسے قرض اتاریں ان کا لفظ دست بستہ گنگ ہیں سارے آج صدی اک ...

Read More »

CAGE — Mubashir Mehdi

We are closed in a cage And we haven’t got any rage Can we break this and undone? No, we haven’t got any power and in numbers we are many, but actually none Our plight and pain have surpassed But we remain indifferent to each other, never our agony we share and asked We keep on bearing the infinite tyranny ...

Read More »

غزل  ۔۔۔ افضل مراد

لائے کہساروں میں نغمگی کا دھیما پن خیمہ بستیوں کے پاس دلکشی کا دھیما پن تیری یاد کے جگنو راستوں میں لاتے ہیں شام کے اترتے ہی روشنی کا دھیما پن اس اجاڑ موسم پر جانے کتنی مدت سے کب سے بھول بیٹھے ہیں ہم خوشی کا دھیما پن جب بھی بھول ہوتی ہے راہ دھول ہوتی ہے راستہ سجاتا ...

Read More »

گلشن پارک میں ایسٹر ۔۔۔ زاہد امروز

ایسٹر 2016 ء لاہور خود کش حملے میں مرجانے والوں کے نام ———————————————————– کتنی آوازیں روزانہ تمہیں بلاتی ہیں کام میں گم دفتر کی میزوں میں دھنسے ہوئے تم ان کو سُن نہیں سکتے زنگ آلودہ جھولوں کی چُر مُر چیخیں بچوں کے دل میں گرتی رہتی ہیں تم ان کو سُن نہیں سکتے رات اور دن زندگیوں کی یک ...

Read More »

سمّو دیوی 1 ۔۔۔ غنی پہوال

سمّو دیوی۔۔۔۔!۔ بادلوں کی رتھ پر سوار اپنی تمام بے رُخیوں کے ساتھ کتنی پُر کشش ہے موسموں کی یہ رنگ بدلتی پری اس سے کہنا کہ ہوا کو سانسوں کے زنداں میں قید مت رکھنا جنگل کا دم گُھٹ جائے گا سمّو دیوی اس پری کو خبر نہ ہونے پائے کہ ان دریاؤں کے سوکھے ہونٹوں کی ویرانیوں میں ...

Read More »

سنگت سعید مستوئی کے لیے  ۔۔۔ ڈاکٹر منیر رئیسانی

ابھی تم اس جگہ بیٹھے سحر کی بات کرتے تھے نگاہوں میں اداسی کے شجر پر صبح نو کرنیں سجاتی تھی مبارِززندگی چہرے کے ہر لمحے پہ لکھی تھی گھٹن کو قہقہوں کی موج سے تحلیل کرتے تھے حیاتِ بے ثمر کی تلخیوں کو مسکراہٹ میں بھلاتے تھے اندھیروں کے مقابل اپنی سوچوں کے چراغوں کی صفیں ترتیب دیتے تھے ...

Read More »