Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2015 » May (page 2)

Monthly Archives: May 2015

غزل ۔۔۔ خالد زیب ؔ بلوچ

کنے سما ئے کہ اٹ جاگہ غا تِڑنگانٹ فریب و دھوکہ غا اونا امر پلنگا نٹ کنا ارانا پتنکاتا خلکنو سودا بروکا وخت چُنا تیکہ ای پریشانُٹ کنا ٹُکر تا کنا جندے ہم سما افک ای جبر و ظلمنا نسخل تیٹ نسگانٹ ارا تما کہ جلو حق اکن کرینٹ ای ای دُزو رہزن و باغی نا پن تننگانٹ کروٹ پین ...

Read More »

غزل ۔۔۔ ڈاکٹر علی دوست بلوچ

راز یہ ہم نے پایا ہے درد بڑا سرمایہ ہے اب نہ رہے گی تاریکی گیت دلوں نے گایا ہے منزل اپنی آنکھوں میں رستہ چل کے آیا ہے غم کے تپتے صحرا میں یاد کا پھیلا سایہ ہے خون ہے سستا پانی سے کیسا دور یہ آیا ہے چاہت میں کیا سود وزیاں کیا کھویا کیا پایا ہے

Read More »

غزل ۔۔۔ عمرؔ برناوی

مہک رہی ہے فضا کون اِدھر سے گزرا ہے بتاؤ پھولو کہ کیا تم نے اُس کو دیکھا ہے شفق بتا تو سہی ، تو نے رنگ کس سے لیے بتادے چاندنی کس سے چٹکنا سیکھنا گھٹاؤ تم نے کبھی زلف اس کی دیکھی ہے بتادے بدر، ذرا روپ اِن کا کیسا ہے بیاض صبحِ بنارس تو آنکھ شامِ اودھ ...

Read More »

رسالہ سنگتہ ناما ۔۔۔ زبیر شاد ۔ خاران

ترا زُبان گونیں ترا درد پہ راجا لبزانکئے شاہئے تئی’’ سنگت‘‘ تئی ہمرا تئی ہمگام و ہمکوپگ بلوچی ئے زبان شہدیں تئی گپ شیرکین و شاد او مہروانی چوش آلبرزا بُرز و ٹوہ چوش بولانئے کوہاں بُرز چوش راسکوؔ ہا مِک تو زبان کو پگاں زرتگ ترا مبات دائما ہچی ہمے دیما جنزان کن ہمے ڈولا کنزان کن مُرادئے منزلئے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ خورشید افروز

ایسے نہیں ہے ٹھیک کہ ویسے نہیں ہے ٹھیک میں اس ادھیڑ بن میں ہوں کیسے نہیں ہے ٹھیک ہر چند پھونک پھونک کے رکھتا ہوں ہر قدم پھر بھی یہ فکر رہتی ہے جیسے نہیں ہے ٹھیک سب جھوٹ ہے مبالغہ آرائی ہے جناب جو آپ کہہ رہے ہیں تو ایسے نہیں ہے ٹھیک ہر شے کو زر میں ...

Read More »

جلتے ہوئے دل کی کہانی ۔۔۔ میکسم گورکی/عبداللہ جان جمالدینی

۔۔۔۔۔۔بڑھیا خاموش ہوئی اور میں اس کے پاس بیٹھا غمگین ہونے لگا۔ مگر وہ آپ ہی آپ کچھ بڑبڑا رہی تھی اور ساتھ ہی ساتھ اونگھ رہی تھی۔۔۔۔۔۔ شاید وہ دعا پڑھ رہی تھی۔ سمندر سے بادل کا ایک ٹکڑا اوپر اٹھا جو کالا‘ گھنا اور بھاری تھا۔ جسکے کنارے کسی پہاڑی سلسلہ کی چوٹیوں کی طرح معلوم ہوتے تھے۔ ...

Read More »

شیدو ڈاکو ۔۔۔ غلام ربانی آگرو؍ جہانگیر عباسی

’’شیدو۔۔۔ اوئے شیدو چل۔۔۔ چل ماسٹر جی بلا رہے ہیں‘‘سورج سوانیزہ پہ آن پہنچا تھا۔ پر وہ ابھی تک صحن میں رکھی ہوئی پرانی چارپائی پہ خود کو پھٹی ہوئی بوسیدہ رلی میں لپیٹے اپنے اردگرد جماعت کے لڑکوں کے مچے ہوئے شور سے بے پرواہ میٹھی نیند کے مزے لوٹ رہا تھاجو باری باری اور کبھی مل کر ایک ...

Read More »

بے پیٹ کے لوگ ۔۔۔ شاکر انور

بلوشی کئی دنوں سے بھوکی اپنے چھوٹے سے مٹی اور پھونس کی جھونپڑی کے کچے صحن میں اوندھی پڑی تھی ۔ پیٹ کے بل لیٹنے سے بھوک کی شدت میں تھوڑی دیر کے لیے کمی ہوجاتی تھی۔ اس کی آنکھیں بند تھیں اور سارا جسم ساکت سا جاگے اور سوتے ہوئے انداز میں تھا ۔ بھوک کا ایک عجیب سا ...

Read More »

افسانچے ۔۔۔ آدم شیر

1۔ نمبردار اس ملک کے عوام کو ایک سازش کے تحت مذہبی نابینا بنادیاگیاتھا۔ لوگ کام دھام چھوڑکر آنکھیں بندکرکے ہجڑوں کی طرح تالی بجاتے اور ایک عجیب سی دھن جسے وہ بھجن کہتے پر جھومتے۔وہاں کابادشاہ وقت وقت پر جنتا کو مذہبی نابینا بنانے کی گھٹی پلاتارہتا۔ اس ملک میں بھجن کے لیے اٹھے ہوئے ہاتھوں کو ووٹ مان ...

Read More »