Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2014 » October

Monthly Archives: October 2014

عطا شاد

ناگتامہ کجئے دل موم بہ بیت چوش نہ بیت پل تئی دا منا وث کیت و کپیت چوش نہ بیت تو بگش ہر چی، مں ہچی مہ گشاں چوش نہ بیت تو بکن کہر مناں مہر بہ بیت چوش نہ بیت من بلیکاں ترا مہکان، جہانا تا لان تاں منی کڈ کا برمشے مہ بلیت چوش نہ بیت من اگا ...

Read More »

سوگات ۔۔۔۔ غنی پہوال

وھدے گراں وابیں راہ منی چمانی گوانر گا جان کشانا کماتگیں کچکانی سرونا آگہہ بیان اتنت گیرانی لدیں گیڑاں چم چو ارد کا سِٹان اِتنت او من تئی کر گوشک وابیں توارئے ترّگا کپتگیں پداں گران اتاں بلے واہشانی شاہین زرابیں چم گوں درچک سازیں رژنے آ مناں روک روکا چارگا اتنت منی ساھگ چو کوہا رُدان بیت گڑادم بُرتیں ...

Read More »

محبت ۔۔۔۔ احمد شہر یار

محبت ہے شہرِ اساطیر کا وہ پرندہ کہ جس کے پروں کی سماوی رسائی زماں سے زماں تک نشاں سے نشاں تک رہے گی! بھی اِس سمندر کی پہنائی میں ہیں کئی لاکھ برسوں کی آئندہ و رفتہ لہریں یہ لہروں کی مہتاب گاہیں کہ جن کی رگوں میں رواں ہے کہیں صبح ِ پیغمبراں اور کہیں عصرِ مقتل کسی ...

Read More »

ہائیکو ۔۔۔۔ خالد جمال

بانور ئِ بشانگ سمجھیت گورکیں کُل پُر نوربیت ھلک ئِ تہا حُورئے بشانگ سمجھیت گلیں دزگہا رغمیگ باں مئے کاڑانی تہا یکے روت دگے ھلکے اَجگیں کشار غمیگ باں عہدانی رنگ وڑوڑا چارگ بنت اِدا شررنگ زمانگ بے وفا بیت گیمراں پُل باگانی بُلبُل ئے دُردانگ بے وفا بیت

Read More »

غزل ۔۔۔۔ ارمان آزگ ۔ خاران

ہچ منادل نہ بیت ماہکانا مگش ساہ و جانا مگش ، مہروانا مگش دوست ئے منا ساہ و جانا چہ گیش او اے گپا کدی توجہانا مگش منی ارواہ توئے و منی زندگی دلے رازاں کدی ہمسرانا مگش بہشت ئے پمنا ٹکرے گل زمین کش چماں مہر ئے نوانا مگش متلب ئے اے جہانا تئی کس نہ بیت دلی دوست ...

Read More »

یوجنیو مونٹیل (اٹلی) ۔۔۔۔ ترجمہ: ڈاکٹر نبیلہ

مجھے وہ سورج مکھی لادو جنہیں میں اگا سکوں اپنی نمک آلودہ جلی زمین میں جب نیلگوں آئینہ تلے سارا دن اُن کے سنہرے چہرے دیکھے آسمان تو ہو حیران جو دور کریں اپنی روشنی سے تاریکی جسم رنگوں کی اس بہتی دھارا میں خود کو کردیں تھکا کے ختم کہ اس طرح کی موسیقی میں اٹھانے پڑتے ہیں اس ...

Read More »

المشتہر ۔۔۔۔ سلیم حسنی

میں شاعر نام کا وحشی میں شہرِ خواب کا باسی بوجہِ زور فرمائی…….. اب اپنے نا خلف جذبوں کو دل کی سب کہی اور ان کہی حالت کے خون ِرائیگاں سے عاق کرتا ہوں تعلق توڑ دیتا ہوں سواب کے گرمرے جذبے طلب کی بدخوئی لے کر کسی کے ریشمی سینے سے جھگڑیں یا کسی کے مر مریں ہونٹوں سے ...

Read More »

غزل ۔۔۔۔ ڈاکٹر منیر رئیسانڑیں

بدن کو آگ، نظر کو غلاف ہونا تھا یہیں تو تیرا میرا اختلاف ہونا تھا دیارِ جاں میں کہیں پھول کھلنے والے ہیں نئی رتوں میں کوئی انکشاف ہونا تھا ہوا کے پیچ میں رقصاں گلاب کی خوشبو محبتوں میں یونہی انحراف ہونا تھا میں چپ رہا تو تیری آنکھ کے سخن پہنچے دلوں کا میل بہر طور صاف ہونا ...

Read More »

سمجھوتہ ۔۔۔۔ ثروت زہرا

کیا ؟ سمجھوتوں کو کانچ کی چوڑیوں کی طرح پیس کر کھایا جاسکتا ہے تنہائی کے درد کو شیو کے نیل کنٹھ کی طرح گلے میں رکھ کر جیا جاسکتا ہے پیاس کو سنووائٹ کے نصف سیب کی طرح حلق میں دبا کر موت کی نیند کا وقفہ لیا جاسکتا ہے مگر یہ سمجھتے تو میرے خون کو زہر کی ...

Read More »