Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی (page 30)

شیرانی رلی

ناقابلِ اشاعت ۔۔۔ محسن شکیل

میری یہ نظم شائع نہیں ہوسکتی یہ اشاعت کے قابل نہیں اس میں شامل ہے گہرا دکھ ہم سب کا مشترکہ دکھ جسے محسوس کیا جاسکتا ہے بیان نہیں احتجاج اور مذمت اِس کے لفظوں میں نعرہ زن آنسو اور آہیں اِس کا دریا سطح پہ بہہ جاتی ہے سسکی لیکن میں یہ نظم دیوار پر کیسے لکھوں کہ ہر ...

Read More »

غزل ۔۔۔ وصاف باسط

سفر کا شور تھمے، رک کے اک نظر دیکھوں میں منظروں میں کبھی دھند اور شجر دیکھوں خدا کرے کہ مجھے لفظ تیرے مل جائیں میں ان کو جھیل کے صفحوں پہ درج کر دیکھوں تمہارے ساتھ کسی اور راستے پہ چلوں ہوا کے پار کہیں آسماں کا گھر دیکھوں مجھے پکارے، تْو چیخے، صدائیں دیتا رہے میں دور ہی ...

Read More »

زندگ بات بلوچستان ۔۔۔ نور محمد نورل

لوٹ ہمش انت سھت و دمان زندگ بات بلوچستان کوچگ کوہ و ڈن و ڈگار وائے وتن مئے ھشکیں دار ندر نت پر تو مئے دل و جان زندگ بات بلوچستان نیلیں زر تئی برات منی ڈیھ و ڈگار نت مات منی ستک یکیم و مئے ایمان زندگ بات بلوچستان تو مئے واھگ و ارمانئے دردیں دلانی درمانئے تو مئے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ وحید نور

‘‘دانش کو ،آگہی کو، نہیں کر سکو گے قید تابندہ روشنی کو ، نہیں کر سکو گے قید مٰٹھی میں جگنوؤں کو دباؤ گے کب تلک؟ گٰھنگرٰو میں راگنی ، کو نہیں کر سکو گے قید کٹ جائیگی چٹان ہر اک ظلم و جبر کی بہتی ہوئی ندی کو ، نہیں کر سکوگے قید سونا ہے جن کا کام، اٰنہی ...

Read More »

غزل  ۔۔۔ امداد حسینی

جہاں نہ کوئی خوش گماں نہ بدگماں ، وہاں چلو سب آئنے اْلٹ دیے گئے جہاں ، وہاں چلو نہ کوئی جانتا تجھے نہ کوئی مانتا مجھے نہ ننگ ہو نہ نام ہو نہ کچھ نشاں ، وہاں چلو حیات کیا ممات کیا حصارِ شش جہات کیا جہاں چلو مگر بہ طرزِ مئے شاں ، وہاں چلو زمیں نہیں ہے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ وھاب شوھاز

راتیں اپنی ، اشک ہمارے اپنے ہیں پھول تمہارے ، کانٹے سارے اپنے ہیں چاند مزاجاً تجھ سا ہے ، یہ تیرا ہے تارے ہم سا ہیں ، یوں تارے اپنے ہیں اْن سے کہہ دو کرنوں سے دامن بھرلیں جلتے سورج کے انگارے ، اپنے ہیں خوشبو ، تیرے ہونے کی ، پابند سہی رنگوں کے بے ربط اشارے ...

Read More »

تازہ اشعار بر زمینِ دانیال طریر ۔۔۔ اسامہ امیر

یار ہر بار طرف دار نہیں ہو سکتی دھوپ ہے صاحبِ کردار نہیں ہو سکتی نت نَئے خواب لئے سوئی ہوئی ہے کب سے وہ پَری نیند سے بیدار نہیں ہو سکتی با وضْو ہو کے اگر ہاتھ میں بھر لوں مٹّی کون کہتا ہے چَمک دار نہیں ہو سکتی شوق سے سنتی ہے غزلیں بھی وہ نظمیں بھی مری ...

Read More »

ہم دھرتی کی ثقافت کے امین ہیں ۔۔۔ انعم جاوید

دھرتی پر جو پھول کھلے ہیں سب کی اپنی اپنی خوشبو سب پھولوں کے رنگ جدا ہیں دھرتی اپنی کوک کی ساری شادابی سے ان پھولوں کو پال رہی ہے موتیوں جیسی شبنم سے دھرتی پھولوں کا منہ دھوتی ہے پھول کھلیں تو دھرتی کیسے خوش ہوتی ہے جب بارود کی بو پھیلے تو پھولوں کے دم گھٹ جاتے ہیں ...

Read More »

مشال کے نام  ۔۔۔ انیس ہارون

درسگاہیں بنیں قتل گاہیں قلم تلوار ہوئے حکم آیا پھونک دوافکارِتازہ کی روشنی کو جو ایک جہانِ نوکی نوید دیتی ہے لرز گئے بام و در دشمن آسماں ہوا زمین کھینچ لی پاؤں تلے فقیہہ شہر نے وہ جواں جو ہاتھ میں سورج لئے اترا تھا نگل لیا اندھیروں نے مبارک سلامت کے شور میں وہ مذہب جو مظلوموں پہ ...

Read More »

میں شاعرہ تو نہ تھی ۔۔۔ سمیرا کہانی

میں شاعرہ تو نہ تھی بس شعر شناس اور سخن فہم تھی جذبہ شناس ،احساس شناس اور خیال شناس تھی ملکۂ جذبات و احساسات و خیالات تھی ان کی شاعری کی گرویدہ تھی ان کے سخن کی دیوانی تھی راہِ سخن کے لئے بس اتنا کافی نہ تھا کچھ اور بھی چاہیے تھا شعر شعار ہونا چاہیے تھا سو اس ...

Read More »