Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی (page 20)

شیرانی رلی

اماں  ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

پازیب چوڑی نتھنی ہار سنگھار سے بے نیاز ہے یہ بندھن زنجیر کی یاد دلاتے ہیں اماں تو آزاد ہے بس آواز ہے خوشبو ہے جھنکار ہے پیار کی دلار کی کبھی ڈانٹ بھی اماں جو ٹف لو ہے جھاڑ جھنکاڑ مٹا کر صاف شفاف شیشے کی مافق انسان ڈھالتی ہے اماں جو آزاد ہے

Read More »

غزل ۔۔۔ عبداللہ شوہاز

سال مٹّ انت ماہ بدل بنت سہب ہم بیگاہ بنت گوں تئی یاداں مئے زندئے چاریں موسم پر گوزنت پہ امیتے عمر گوست ودرائیں دنیا سمبھ اِت مئے تماہ کلمانٹ بیتاں جزم زاناں پیر بنت کد پدا بوجیگا مہرئے شار تئی آچار بیت کد مئے چمانی تیابا موج ارس ئے سمبر نت مہہ چہ تئی بیکانی بامیں لنجمی آدر کپیت ...

Read More »

نظم ۔۔۔ ثانی خان

دادخواہانِ شہر کے صف میں وہ بھی ہیں جن کی تسبیحات لہو۔۔ جن کا منبر ہے مقتلِ انساں بو بارود جن سے آتی ہو جن کے نعروں میں دادِ قاتل ہو کشت و خوں زندگی کا حاصل ہو رخ پہ آثارِ بود باطل ہو ہاتھ خنجر تو لب پہ بسمل ہو وہ قصیدہ حق سنائیں کیا شہ کا کردار وہ ...

Read More »

وحید نور

محوِسفر جنون کے ہیں ہم قدم سے ہم اس طرح سْرخرو ہیں وفا کے عَلَم سے ہم ہوتا ہے جانثاروں میں اپنا شمار بھی پہنچے ہیں اس مقام پہ اپنے ہی دم سے ہم تو لاکھ تفرقوں میں ہمیں بانٹ سْن مگر انسانیت شعار ہیں اپنے دھرم سے ہم آؤ کہ اب شروع کریں جنگ آخری ہتھیار تم اٹھاؤ، زبان ...

Read More »

نظم آباد ۔۔۔اسامہ امیر 

پہلی بار سارہ شگفتہ ایکسپریس میں بیٹھا علاقہ ثروت میں قدم رکھا ذی شان ساحل نظم آباد کے داخلی دروازے پر ایمیل اور دوسری نظمیں لئے استقبال کو پہنچیں افضال احمد سید گلابوں سے بھرے تھال اور بارش سے بھیگی ہوئی چھتری لئے سمندر کے کنارے ایک چھری کے ہمراہ موجود تھے “جو سیب کو ٹیڑھا کاٹتی ہے” میں پہلا ...

Read More »

غزل  ۔۔۔ افتخار عارف

قصہِ اہلِ جنوں کوئی نہیں لکھے گا جیسے ہم لکھتے ہیں، یوں کوئی نہیں لکھے گا وحشتِ قلبِ تپاں کیسے لکھی جائے گی حالتِ سوزِدروں کوئی نہیں لکھے گا کیسے ڈھے جاتا ہے دل ، بجھتی ہیں آنکھیں کیسے؟ سرنوشتِ رگِ خوں، کوئی نہیں لکھے گا کوئی لکھے گانہیں کیوں بڑھی ، کیسے بڑھی بات؟ کیوں ہوا درد فزوں ، ...

Read More »

نوشین قمبرانی

میں تمہیں نہ ملوں یہاں تک کہ تم میرا چہرہ بھول جاو میں تمہیں ملوں پھر سے اْسی طرح گم ہوچکی ہوئی تم مجھے پھر سے پہلی بار دیکھو اور نہ پہچانو تم وہ نظم پھر سے کہو اور تمہیں اپنی گذشتہ کوئی بھی کیفیت یاد نہ آئے تم مجھے کھونے کے ڈر سے لرزنے لگو اور میں تمھاری ہونے ...

Read More »

عاصمہ! تم جاوداں ہو ۔۔۔۔ کشور ناہید

عاصمہ! آج تمہارے لاہور شہر کی فصیل میں دراڑ پڑ گئی ہے مفسد وعیار، بربریت کے پروردہ آج تمہارے جانے پہ خوش نظر آرہے ہیں یہ تو اُس دن بھی خوش تھے جب حسن ناصر، فیض اور بھٹو خاندان کو اللہ میاں کے پاس بھیج دیا گیا تھا اللہ میاں نے پھر دیکھا، پھر وہی شیطان کبھی مشال ، کبھی ...

Read More »

عورت کی ہستی ۔۔۔ نور محمد شیخ

عورت:۔ ماں، بہن بیٹی اور کئی محترم رشتے ناتے گھر ، خاندان کے ہر مرد کے لیے: کُنبے، قبیلے کی ہر عورت کے دل میں، بے حد احترام موجود مگر پھر بھی ، جیسے: عورت ومرد میں ذہنی ، احساساتی اور جذباتی، دُوری یافاصلہ موجود تنگ نظر سوچ کا حامل:۔ مظلوم ، ستائے ہوئے انسانوں پر صدیوں سے حکمرانی کرنے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ عظیم انجم ہانبھی

مذاق اپنا اْڑا رہا تھا مرے مقابل وہ آرہا تھا مجھے محبت نہ راس آئی وہ مجھ کو نفرت سکھا رہا تھا مرے عدو رو پڑے تھے جس دم میں اپنی بپتا سنا رہا تھا ’’کچھ اور بھی ہوگیا نمایاں‘‘ وہ خود کو مجھ سے چھپا رہا تھا وہ بن کے سورج ہْوا تھا مہماں میں موم گھر کو سجا ...

Read More »