Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی (page 2)

شیرانی رلی

سلیم حسنی

ساٹن ، مفلر اور گھنٹی  میں دیکھتا ہوں سفید سا ٹِن !۔ سفید ساٹِن پہ لال دھاریں یا نیلے دھبّے بنے ہوئے ہیں سیاہ مُفلر!۔ سیاہ مُفلرسے گرم سانسوں کی بھاپ اُٹھتی ہے اور پتیل کی ایک گھنٹی ۔۔ اجاڑ دیتی ہے خواب میرا ’’بابا۔۔!‘‘ میری پہلی محبت کی گھنی زلفوں میں چاندی کا چمکتا تار آیا ہے تو لگتا ...

Read More »

سلیمؔ جان بزدار

دانی گیرَئے دِلا  مُدتے آ شہ من تو جُدا بیثغوں مئیں و تئی مہرئے وشبو گواثاں بُڑتَنت قول وعدہ قسم کُل آں زنگاں جثنت ٹُل شونقانی پرُشتو بُنا کپتغنت ناگُماں بے گُمانی نذر بیثغاں دانکُرے آ دِہ تئی مہرو بشکند سری مں شمُشتغ نیئنت دانی گیرنت دِلا وھد من تئی سرا رنج بیثہ نوی رنج بیثہ نوی آزماں مئے سرا ...

Read More »

سلمیٰ جیلانی 

بہتی آنکھوں کا خواب میں خواب دیکھتی ہوں یہ ست رنگی صبح کا خواب نہیں کچھ ستے ہوئے سے چہرے ہیں کھائیوں سے ابھرتی دکھ کی گہری پرچھائیاں ہیں بہت سی آنکھیں چھم چھم نیر بہاتی ہیں بارش بہتی رہتی ہے کوئی دیکھتا نہیں گائے کو سر پر بٹھائے وہ مدقوق انسانوں کی بلی دیتے ہیں ماں میرے چہرے پر ...

Read More »

سعید مزاری

مونج  اے مونج آھڑے نئیں اے مونج سانوڑے نئیں اے مونج موسمے نئیں، کہ ماہ دوا گار بی اے مونج عمرئے سنگتیں اے مونج زیندئے زینتیں اے مونج ساھئے سَنَّتیں خزاں بی یا بہار بی دمے آ لِک و او ڈھریں دمے چو روشا زاھریں دمے کساں دمے مزن دمے گشئے کہ لاندویں دمے گشئے کہ لاغریں دمے سمین بھیرا ...

Read More »

سلمیٰ جیلانی 

خوشی /اداسی  جیون ایسی کتھا جس میں خوشی اور اداسی کے سائے ہمہ وقت گڈمڈ رہتے ہیں پل دو پل کو خوشی کا سورج افق کے پار ابھرے تو اداسی اپنے طویل پنکھ پھیلاتی ہے اور دل پر اندھیرے کا کبھی نہ ختم ہونے والا راج پاوں پسار لیتا ھے مگر پھر کوئی ننھی کرن مسکراتی ہے جسے امید کہتے ...

Read More »

سعدیہ بشیر

آئینہ دل  میرے دل کے اک خانے میں غم پیر پسارے بیٹھے ہیں تم بھی تو اک غم ہی ہو ناں اک خانے میں دلدل ہے اس میں جکڑی ہیں کچھ یادیں آنسو ،آہیں اور تصویریں باتیں ،شکووں کی زنجیریں لاکھ رہائی دینا چاہوں اور بھی جکڑی جاتی ہیں پہروں مجھے رلاتی ہیں اک خانہ خواہش کا ہے جس میں ...

Read More »

سحر انصاری

زندہ رہنا سیکھیے پیڑ، پودے اور پرندے آسماں پر اُڑتے بادل اور سمندر کے کناروں سے لپٹتی نقرئی موجیں دھنک کے رنگ اور بارش کے قطرے ہوا کے تازہ جھونکے صبح کے سورج کی پہلی روشنی کہہ رہی ہے زندہ رہنا سیکھیے ماہِ شب کی مسکراتی چاندی کہکشاں کے سلسلے روشنی کی تیز تر رفتار سے بھی دور گرداں تازہ ...

Read More »

سحر اِمداد 

سناٹا آج کل کتابوں میں یا کہ پھر رسالوں میں اور روزناموں میں جو کلام چھپتا ہے اْس کلام میں اکثر شاعری نہیں ہوتی!۔ شاعری کی نگری کے راستے گذرتے ہیں وحشتوں کے سائے میں اور لوگ جیتے ہیں دہشتوں کے سائے میں!۔ شاعری کی نگری کے گھر تو ہوگئے بلڈوز اور جو بچے ہیں وہ اجتماعی قبریں ہیں!۔ سانجھ ...

Read More »

سبین علی 

بحر قلزم کے کنارے مدوجزر تلے سرکتی سنہری ریت قدموں تلے چبھتے گدگداتے کھلکھلاتے مونگے اور دور پرے افق سے ابھرتی گھاٹ کی جانب رواں کشتیاں عجب تمکنت سے موجوں کا سینہ چیرتی ہیں تیرے ان متبرک پانیوں کا کہ جن پر ناخدا کے بنا بھی شکستہ سفینے ساحلوں پر لنگر انداز ہوتے رہے دنیا بھر کے ملاح جس طرف ...

Read More »

سانی سیّد

سو اب کچھ بھی نہیں ہیں نہیں ایسے کہاں تھے سفر کی ابتدا میں ہماری روشنی سے بھرچکی آنکھوں میں خوابوں کے خزانے تھے سبھی موسم سہانے تھے ہمارا دل دھڑکتا تو کسی کا نام سنتے تھے اک ایسا نام جس کو ہم سے مشرک اسم اعظم جانتے تھے ذہن اک باغ تھا جس میں خیالوں کی حسیں پریاں مسلسلِ ...

Read More »