Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی

شیرانی رلی

اس وقت تو یوں لگتا ہے ۔۔۔ فیض

اس وقت تو یوں لگتا ہے اب کچھ بھی نہیں ہے مہتاب نہ سورج،نہ اندھیرا نہ سویرا آنکھوں کے دریچوں پہ کسی حسن کی چلمن اور دل کی پناہوں میں کسی درد کا ڈیرا ممکن ہے کوئی وہم تھا، ممکن ہے سنا ہو گلیوں میں کسی چاپ کا اِک آخری پھیرا شاخوں میں خیالوں کے گھنے پیڑ کی شاید اب ...

Read More »

وبا ۔۔۔ اعجاز احمد بلوچ

وبا نے ہم پر غلبہ پالیا الجھنوں کی بھیڑ میں کچھ خواہشات رہ گئیں کچھ جستجوؤں کا ابھی تک انتظار ہی تھا۔ وقت نے چلنا بند کردیا۔۔ مندر بند ہونے لگے گرجا گھروں میں خاموشی چھا گئی طوائف پر پابندی عائد ہوگئی۔۔ لوگ ایک دوسرے سے دور بھاگنے لگ گئے اجتماع پر پابندی عائد ہوگئی مجلسیں ویران ہوگئیں جیسے امید ...

Read More »

پَنڈو گِر ۔۔۔ اکبر بارکزئی

دُنیا ئے شہ زانو گراں او رُژن گواریں مہتراں کچکولوں زانت ئے ہوراگ اِنت فکر ئے ڈگاروں سورگ اِنت بخشِت منا را پنڈگے زانت ئے وتی یک ذَرّگے!۔ فِکر اِنت شمے دیما بَران دُنیا ئے درُستیں مَردمان من بَزّگ و بیچارگیں قومِ بلوچ ئے رَہبراں شیر و مزارئے دَروَراں!۔ راج ئے بلے بازیں غَماں عیشی سرئے ہوشوں شُتگ آساں ماں ...

Read More »

صفدر صدیق رضیؔ

ہم اسی شہر میں رہنے کو مکاں ڈھونڈتے ہیں بے گھروں کو درودیوار جہاں ڈھونڈتے ہیں   ڈوبنے والے نہیں ملتے اسی پانی میں ہم جہاں کھوئے تھے کیوں آپ وہاں ڈھونڈتے ہیں   ہم بھی کیا سادہ ہیں بیچ آئے تھے بن مول جہاں اُسی بازار میں جاکر دل وجاں ڈھونڈتے ہیں   ہم جنہیں معرکہِ عشق میں کھو ...

Read More »

سرخ گلاب بھلے لگتے ہیں ۔۔۔ رخشندہ نوید

اُس کے گھر میں کوئی روشن دان نہیں تھا سورج قطرہ قطرہ بہہ کر اندر آتا چاررتوں میں موسم ایک ہی رہتا کوئی پھول نہیں کھلتا تھا اندھے خوابوں کی چوکھٹ پر ”سرخ گلاب بھلے لگتے تھے“ اس لڑکی کو جس کے گھر میں موسم کبھی نہیں بدلا تھا خوابوں کی زنجیر گلے میں باندھے اپنے زنداں کی اونچی دیوار ...

Read More »

پکھی واس ۔۔۔ مدثر بھارا

کوئی صدیاں دی ساکوں ڈس ہائی پئی جو پکھیاں لڈکے ٹردئے رھو جتھاں شام تھیوئے اتھاں ٹک پوو ساڈے پُرکھاں دا ہکو منتر ہا ہر راہ اپڑاں ہر واہ اپڑاں ہر شاہر اپڑاں ہر جاہ اپڑیں ہے ملک اپڑاں ہے سجھ اپڑاں ہے بھوئیں اپڑیں ہے رُکھ اپڑاں ہے رَکھ اپڑیں ہے کھوہ اپڑاں ہے چھاں اپڑیں ول ویلا بدلے ...

Read More »

عاصمہ طاہر

یہ جو اتنا چہک رہے ہیں آپ ہائے کتنا جھجک رہے ہیں آپ   بدلے بدلے سے آپ کے تیور آج ہم کو کھٹک رہے ہیں آپ   آپ سے میں جھلک نہیں پائی مجھ سے کتنا جھلک رہے ہیں آپ   ہم سے باتیں بھی کیجئے صاحب کب سے آنکھوں میں تک رہے ہیں آپ   رفتہ رفتہ دہک ...

Read More »

غزل ۔۔۔ فاطمہ حسن

تنہائی بھی سناٹا بھی احساس زیاں بھی اب ہجر میں شامل ہے کوئی زرد نہاں بھی اک پھول کی صورت کبھی یادوں میں سجا ہے اک سائے کے مانند وہ ہے ساتھ رواں بھی آنکھیں ہوئیں مانوس مناظر سے کچھ کچھ ایسی کرتیں ہیں تصور پہ حقیقت کا گماں بھی دعویٰ ہے صداقت کا مگر مصلحتاً وہ ڈرتی ہوں بدل ...

Read More »

بانگ،گودی ۔۔۔ محمد رفیق مغیری

جیجل ماث جِنک ئے استئے گْہار بانک اشتا شہ سِوا بیثیں اے دنیا ازار بانک حذا حسن داثہ شْوارا باز گودی حیراں حْور استاں تھئی سرا زیندار بانک تھئی گندغا گو روحا کھیث راحت سبب سکون ئے  استئے چمانی ٹھار بانک وجود تھئی آ گو بہشت جہانیں وشیں تھئی ٹھونکا شہ کھیث بہار بانک تھئی صحوتا شہ بیغاں دْراھ بیمار ...

Read More »