Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ (page 23)

قصہ

کھلے پنجرے کا قیدی ۔۔۔ آدم شیر

”یہ موت کا گولا ہے یا پنجرہ ، ایک بہت بڑا پنجرہ، میں نہیں جانتا۔ ایک بار مجھے محسوس ہوا کہ یہ موت کا گول گول بڑا گولا ہے جس میں مَیں موٹرسائیکل چلا رہا ہوں۔ کبھی گھڑی کی سوئی کی طرح دائیں سے بائیں گھوم رہا ہوں اور کبھی موٹرسائیکل کو آڑھا ترچھا بھگا رہا ہوں۔ یوں اوپر نیچے ...

Read More »

کچرا چُننے والے ۔۔۔ اقبال خورشید

یہ اُس انتہائی غیراہم المیے کی رُوداد ہے، جس نے میرے طرز زیست کو یک سر بدل دیا! کچرا چُننے والے باپ بیٹے کے بہیمانہ قتل کو ایک معمول کا واقعہ خیال کرتے ہوئے اُس یخ بستہ شام تو مَیں اپنی غیرضروری مصروفیات ہی میں جُٹا رہا، لیکن ٹھیک چار روز بعد، یک دم گلی کے نکڑ پر وقوع پذیر ...

Read More »

تین کلومیٹر روڈ ۔۔۔ انور شیخ/ ننگر چنا

انکوائری افسر اللہ رکھا کو ایک انکوائری تفویض ہوئی کہ ایک پختہ سڑک جو کہ تین کلومیٹر تعمیر ہونے کے باوجود محلِ وقوعہ پر موجو د ہی نہیں ہے اس کا پتہ لگایا جائے۔ انکوائری افسر اللہ رکھا بمع سٹاف، سفید کاغذات، کاربن پیپرز اور بال پوائنٹس کے ، تحقیقات کرنے نکل کھڑا ہوا اور پہنچ گیا محکمہ تعمیراتِ سڑک ...

Read More »

صبح کی اذانوں تک ۔۔۔ محسن ایوب

رات کا وقت تھا۔ ہر طرف خاموشی چھا ئی ہوئی تھی۔ گھڑیال کی سوئی معمول سے کچھ زیادہ تیزی میں وقت کو سر کر رہی تھی۔ سردیوں کی ہلکی ہلکی سی ہوا پورے گاﺅں والوں کو ٹھنڈی ٹھنڈی تھپکیاں دیتے ہوئے چین سے سلارہی تھی۔ میں معمول کے مطابق کرسی پر بیٹھا تھا۔لیکن آج ایک عجیب سی کیفیت تھی۔ذہن کی ...

Read More »

سونے میں اُگی بھوک ۔۔۔ آغا گل

الیکشن کے ہارنے کے بعد سے الحاج میر پاسوند خاں اپنے بیٹے ڈاکٹر شیر دل کی تجویز کو سنجیدگی سے لینے لگا۔ اپنی مقبولیت کے لئے قریب کے قبیلے سے جھگڑا کیا اور اپنے قبیلے کو مدد کے لےے پکارا۔ قبرستان میں ایک نیا مزار بنا کر اس پہ متولی بٹھادیا۔ لوگ مزار پر آنے لگے۔ جہاں پاسوند نے سبیل ...

Read More »

شہ رگ ۔۔۔۔ طاہرہ اقبال

نہر کا پاٹ چوڑا تھا‘ اور پانی کا بہاﺅتیز تھا۔ کبھی مورنی سی پیلیں ڈالتابھنور سا گھومتا‘ کبھی پنہاری سی گاگریں لڑھکاتا ‘چھلیں اُڑاتا‘ نہر کے ان عنابی رنگ پانیوں میں عورتیں نہاتیں تو اموکو اپنی گابھن بکریوں کی طرح رس بھری معلوم ہوتیں۔ اُن بکریوں کی طرح جن کے تھن دودھ سے بھرے اور سلاخوں سے تنے ہوئے ہوتے‘ ...

Read More »

جواری ۔۔۔۔ غلام عباس

پولیس نے ایسی ہوشیاری سے چھاپہ مارا تھا کہ ان میں سے ایک بھی بچ کر نہیں نکل سکاتھا اور پھر جاتا تو کہاں، بیٹھک کا ایک ہی زینہ تھا جس پر پولیس کے سپاہیوں نے پہلے ہی قبضہ جما لیا تھا۔ رہی کھڑکی، اگر کوئی منچلا جان کی پروانہ کرکے اس میں سے کود بھی پڑتا تو اول تو ...

Read More »

صحرا اور ڈوبتا چاند ۔۔۔۔ آدم شیر

انسان کا معدہ بڑی بری بلا ہے۔ یہی وہ بلا ہے جو دس سال کے شمس کو کھا گئی ۔وہ میرے ساتھ اس بلا سے بچنے کے لئے بھاگ رہا تھا۔ اس کا دوست حسن بھی ساتھ تھا جس کا کوئی مائی باپ نہ تھا۔ وہ شمس سے دس مہینے بڑا تھا اور میں ان دونوں سے سات آٹھ سال ...

Read More »

زہریلا انسان ۔۔۔۔ آغا گل

بہت دنوں سے جلات خان فراری بنا پھرتاتھا ۔ کسی قوم قبیلہ والے کو تو اغواءکرنے کی ہمت نہ پڑی۔ سب سے پہلے وہ بازار سے جیرا نائی اٹھا کے لے گیا۔ اس کے بعد پھتو قصائی پر عتاب نازل ہوا۔ ازاں بعد اس نے بڑا ہاتھ مارا اور ژوب کے سٹیشن ماسٹر نذیر کو اغواءکرکے پہاڑوں میں لے گیا۔ ...

Read More »

تین غنڈے ۔۔۔۔۔ کرشن چندر

اس کا نام عبدالصمد تھا۔ وہ بھنڈی بازار میں رہتا تھا محض اسی لےے بہت سے لوگ اُسے غنڈہ کہتے تھے۔ ہوگا عبدالصمد بھی غنڈہ ، گو اس بے چارے کو زندگی بھر یہ پتہ نہ چلا کہ وہ ایک غنڈہ ہے ۔ بالعموم لوگوں کو اپنی زندگی میں اپنے بارے میں تھوڑا بہت معلوم رہتا ہے۔ مثلاً یہ کہ ...

Read More »