Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ (page 20)

قصہ

بھکاری ۔۔۔ آدم شیر

وہ بھکاری نہیں تھا،کم از کم مجھے تو نہیں لگتا تھا۔ اس کی میلی چادر میں کئی راہ گیر بھیک ڈال دیتے لیکن وہ بھکاری نہیں تھا۔ میں روز اسے ایک موڑ پر جھولی پھیلائے بیٹھا دیکھتا ۔ وہ کوئی صدا نہیں لگاتا تھا۔ چپ چاپ بیٹھا رہتا ۔ اسی جگہ کئی بھکاری اشارے پر رکنے والی گاڑیوں کے گرد ...

Read More »

سنگت ۔۔۔ گلزار گچکی

من چہ ترسا گار اتوں۔ سرا بگر داں پاداں ہیدا جانشود اتوں او کترہ کترہ مرگہ بیما انچو دَرہگا اَتوں گشے گوئر ی تپا گپتگ اَت۔ باریں کدی منا بوکش اَنت او کڈے آ چگل بدی اَنت ،ڈونڈوار منی جون ءَ پر بہ لچنت او منی گوشت ءَ گوں وتی تینزیں پانچل ءُ تُسکیں سٹا ٹُگ بجن اَنت او بور ...

Read More »

جلتے ہوئے دل کی کہانی ۔۔۔ میکسم گورکی/عبداللہ جان جمالدینی

۔۔۔۔۔۔بڑھیا خاموش ہوئی اور میں اس کے پاس بیٹھا غمگین ہونے لگا۔ مگر وہ آپ ہی آپ کچھ بڑبڑا رہی تھی اور ساتھ ہی ساتھ اونگھ رہی تھی۔۔۔۔۔۔ شاید وہ دعا پڑھ رہی تھی۔ سمندر سے بادل کا ایک ٹکڑا اوپر اٹھا جو کالا‘ گھنا اور بھاری تھا۔ جسکے کنارے کسی پہاڑی سلسلہ کی چوٹیوں کی طرح معلوم ہوتے تھے۔ ...

Read More »

شیدو ڈاکو ۔۔۔ غلام ربانی آگرو؍ جہانگیر عباسی

’’شیدو۔۔۔ اوئے شیدو چل۔۔۔ چل ماسٹر جی بلا رہے ہیں‘‘سورج سوانیزہ پہ آن پہنچا تھا۔ پر وہ ابھی تک صحن میں رکھی ہوئی پرانی چارپائی پہ خود کو پھٹی ہوئی بوسیدہ رلی میں لپیٹے اپنے اردگرد جماعت کے لڑکوں کے مچے ہوئے شور سے بے پرواہ میٹھی نیند کے مزے لوٹ رہا تھاجو باری باری اور کبھی مل کر ایک ...

Read More »

بے پیٹ کے لوگ ۔۔۔ شاکر انور

بلوشی کئی دنوں سے بھوکی اپنے چھوٹے سے مٹی اور پھونس کی جھونپڑی کے کچے صحن میں اوندھی پڑی تھی ۔ پیٹ کے بل لیٹنے سے بھوک کی شدت میں تھوڑی دیر کے لیے کمی ہوجاتی تھی۔ اس کی آنکھیں بند تھیں اور سارا جسم ساکت سا جاگے اور سوتے ہوئے انداز میں تھا ۔ بھوک کا ایک عجیب سا ...

Read More »

افسانچے ۔۔۔ آدم شیر

1۔ نمبردار اس ملک کے عوام کو ایک سازش کے تحت مذہبی نابینا بنادیاگیاتھا۔ لوگ کام دھام چھوڑکر آنکھیں بندکرکے ہجڑوں کی طرح تالی بجاتے اور ایک عجیب سی دھن جسے وہ بھجن کہتے پر جھومتے۔وہاں کابادشاہ وقت وقت پر جنتا کو مذہبی نابینا بنانے کی گھٹی پلاتارہتا۔ اس ملک میں بھجن کے لیے اٹھے ہوئے ہاتھوں کو ووٹ مان ...

Read More »

دس ضرب دو برابر صفر ۔۔۔ آدم شیر

لاہور کے شمال میں ایک پرانی بستی ہے جس کی ایک تنگ اور بند گلی میں موجود ایک کمرے کے مکان میں بلوکرایہ پر رہا کرتی تھی۔ اس شہر کی تنگ گلیاں اندر سے بڑی کھلی ہوتی تھیں۔ پہلے یہاں رہنے والوں کے دل بھی کھلے ہوا کرتے تھے۔ پھر کھلی گلیوں اور تنگ دلوں کا زمانہ آ گیالیکن تنگ ...

Read More »

بارش کے قطرے ۔۔۔ عابدہ رحمان

دن کاتیسراپہر شروع ہو رہا تھا۔ سندر بائی ’ناشتے‘ سے فارغ ہوئی۔ وہ آج بڑی گم سم تھی۔ رہ رہ کر اسے رات کو آیا ہوا وہ خوبرو ڈاکٹر یاد آ رہا تھا۔ جانے کیوں وہ ساجد نامی اس ڈاکٹر کے آنے سے کچھ بے چین سی ہو جاتی تھی۔ آج تو سندر بائی نے کپڑے ہی نہیں بدلے۔ سادے ...

Read More »

وہاں بھی غیرت کا قتل؟ ۔۔۔ افضل توصیف

وہ پہاڑی بستی تھی۔ مگر عجب تنگ سی بستی۔’’ ہوا تو گزر جاتی ، مگر وقت وہاں اٹکا ہی رہ جاتا‘‘۔ یہ بات اُ س بستی کے ایک عقلمند بوڑھے نے کہی تھی ۔ اور پھر شہر کے ایک سمجھدار جوان نے اُس بستی میں جاکر دیکھا تو عجب دیکھا:وقت وہاں کھڑا ہے، جانے کتنے وقتوں سے، تاریخ کبھی گزری ...

Read More »

افسانچہ ۔۔۔ شبیر شاکر

تگرد اور کھجور سے بَنی ایک خوبصورت جھونپڑی جس کی چھوٹی سی پنجرہ نما کھڑکی سے ایک خوبصورت اور معصوم چہرے والی لڑکی حسرت بھری نگاہوں سے دیکھ رہی تھی۔ بغیر دروازہ والی جھونپڑی میں نہ جانے اُس نے اپنے آپ کو کیوں تنِ تنہا قید کیا حالانکہ نہ دور دراز رکاوٹ تھا اور نہ کوئی دوسرا! نامدِ نظر بس ...

Read More »