Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ (page 10)

قصہ

کہانی کار ۔۔۔ شہباز اکبر الفت

آئل پینٹ میں بنی وہ تصویر دو حصوں پر مشتمل تھی، ایک حصے میں ریستوران کا منظر تھا جہاں ایک چہرے مہرے سے متمول نظر آنے والے شخص کے سامنے انواع و اقسام کے کھانوں سے بھری میز موجود تھی جبکہ دوسرے حصے میں ایک بوڑھی عورت گھر کے کچے صحن میں چولہے پر روٹیاں پکاتے ہوئے ایک ہاتھ سے ...

Read More »

دوا۔۔۔ لوہسون / شان گل

خزاں کی رات تھی ۔ چاند ڈوب چکا تھا مگر سورج نکلنے میں ابھی دیر تھی ۔ آسمان پر ایک نیلگوں سی روشنی پھیل رہی تھی ۔ چند چمگاڈروں کے سوا بقیہ رات خوابیدہ تھی ۔ بوڑھا چوآن بستر سے اٹھ بیٹھا ۔ اس نے بتی جلائی تو چائے خانے کے دو کمروں میں ہلکی سی روشنی پھیل گئی ۔ ...

Read More »

میرا بیٹا مہدی ۔۔۔ امر جلیل/عظیم انجم ہانبھی

میں اندھیرے میں نگاہیں جمائے اپنے کچے گھر کے پکے دروازے کی جانب دیکھ رہا تھا۔ دروازے کے باہر گلی میں ایک مردہ سا زرد بلب میونسپلٹی کی صلیب یعنی پول پر لٹک رہا تھااور ہماری زندگی کی طرح ٹمٹما رہا تھا۔ بلب بھوندو تھا، کبھی بجھ جاتا تو کبھی جل پڑتا،لیکن ہمارے کچے گھر میں اندھیرا تھا۔باہر اندھیرے میں ...

Read More »

انصاف ۔۔۔ زیب سندھی/ ننگرچنا

رات کے وقت قافلہ سرائے کو جانے والی ویران سڑک پر دو نوجوانوں کا راستہ روک کر اُنہیں لُو ٹنے کی کوشش کی گئی۔ لُوٹنے والے بھی دو اشخاص ہی تھے۔نوجوانوں نے مزاحمت کی تو ایک لُٹیرے نے اٹھارہ برس کے نوجوان کو بانہوں کے گھیرے میں جکڑکربے بس کردیا اور دوسرے لُٹیرے نے سترہ برسوں کے نوجوان پر خنجرسے ...

Read More »

قیمت ۔۔۔ صنو بر الطاف

لوگ غلط کہتے ہیں کہ زندگی حرکت کا نام ہے۔اگر ایسا ہے تو مجھے جلدی سے قبر میں اتار دیں۔کیونکہ میں دس سال سے اس شیشے کے ڈربے میں کھڑا ہوں۔مجھ سے زیادہ جمود کا شکار اور کون ہوگا۔میرے لیے یہ دس سال ایک صدی سے کم نہیں۔میں کراچی کے سب سے بڑے ہسپتال کا ایک بہت چھوٹا سا ریسپشنسٹ ...

Read More »

منجمد سسکیاں ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی ۔۔ نیو زی لینڈ 

میں کوئی عام فوٹوگرافر نہیں ، جنگ اور اس کی ہولناکیوں کو تصویر کرنا میرا ہنر ہے ۔ جتنا زیادہ دل فگار منظر ہو کیمرے کی آنکھ میں قید کر کے دنیا میں آگاہی پھیلانے کو اتنی ہی موثر چوٹ لگاتا ہو ں ،میری تصویریں امن کے لئے کام کرنے والی تنظیمیں اپنے بینرز پر سجاتی ہیں ۔ ایسے ہی ...

Read More »

دہشت ۔۔۔ منیر احمد بادینی / شرف شادؔ

بس چلنے لگی تھی مگر پھر دھیرے دھیرے رُک گئی۔ میں نے کھڑکی سے دیکھا ایک مسافر دُور سے لمبے ڈگ بھرتا بس کی طرف آرہا تھا۔ شاید ڈرائیور نے اُسے دیکھا، تو اُس کے لئے بس روک دی ہو۔ اوپر آسمان پرکالی گھٹائیں چھا گئی تھیں اور بس کے روانہ ہونے سے کچھ لمحے پہلے بوندیں بھی پڑنا شروع ...

Read More »

زندگ مردگ ۔۔۔ ذوالفقار علی زلفی

مدتے بیت من چہ وتی ہلکا در نہ کپتگ آں بلکیں راستیں گپ ایش انت منا یات ھم نہ انت من کدی در کپتگ اوں…چوں ھم نہ انت در آیگ ئے کوشست نہ کتگ , باز کتگ , بے سوب بوتگاں۔۔۔بلّک گوشیت , ہلکا ڈن وروک انت بگندے بہ بنت۔۔۔منی ھیالا بلک دروغ بندیت یا بوت کنت پیری آ سر ...

Read More »

تاریک راہوں میں ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

دھیمی موسیقی اور مدھم روشنی جھینگا ریستو ران کی سحر انگیزی میں اضافہ کر رہی تھی۔ ڈین اپنے دو ستوں ماریا اور ہینس کے ساتھ سی فوڈ کی ڈیلیکسی سے لطف اندوز ہو رہا تھا۔ یکا یک اس کی نظر جھینگوں کی پلیٹ کے ساتھ موجود ہاتھ دھونے کی سنہری بالٹی کے پانی پر مرکوز ہو گئی جس کا رنگ ...

Read More »

پارما کے بچے ۔۔۔ میکسم گورکی / صابرہ زیدی

جینیوآ میں ریلوے سٹیشن کے سامنے والے چھوٹے سے چوک میں لوگوں کا ایک بہت بڑا مجمع جمع ہو گیا تھا۔ان میں زیادہ تر مزدور تھے۔ لیکن کافی تعدا دخوب اچھی طرح کھائے پئے ، خوش پوشاک لوگوں کی بھی تھی ۔ مجمع کے سامنے میونسپلٹی کے اراکین کھڑے تھے اور ان کے سروں کے اوپر شہر کا بھاری ، ...

Read More »