Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ

قصہ

طوفان کی رات اور سمولنی ۔۔۔ شاہ محمد 

سمولنی سراپا چراغاں تھا۔ پرجوش لوگوں کے گروہ تیزی سے آگے پیچھے آجارہے تھے۔ یوں تو عمارت کے ہر حصے میں جوش و خروش دکھائی دیتا تھا لیکن لوگوں کا ایک جم غفیر سب سے زیادہ بے صبری اور تیزی سے اوپر کی منزل کی طرف رواں دواں تھا جہاں فوجی انقلابی کمیٹی کا اجلاس ہورہا تھا۔ باہر کے کمرے ...

Read More »

سینے کا زخم ۔۔۔۔ سمیرا کیانی

’’ کمینی پیسے نکال‘‘ ’’نہیں ہیں میرے پاس ‘‘ ’’تیرے پاس نہیں ہیں تو تیرے یار کے پاس ہیں؟‘‘ ’’کتنی دفعہ کہا ہے یہ گھٹیا زبان میرے ساتھ مت استعمال کیا کر۔‘‘ ’’آگے سے بکتی ہے کتیا۔‘‘یہ کہتے ہوئے پھیکے نے اس کی چٹیا کو گدی سے پکڑ کر اپنے بازو پر بل دیتے ہوئے نیچے کھینچا تو کرب سے ...

Read More »

ورثہ میں ملنے والی خوشبو ۔۔۔ غلام نبی مغل ؍ ننگر چنا

چھوٹی سی بچی شبانہ میرے قریبی فلیٹ میں اپنے رشتہ داروں کے ساتھ رہتی ہے۔مجھے اس کے والدین کے متعلق کچھ پتہ نہیں تھا لیکن اتنا ضرور سمجھ رہا تھا کہ اس کے بہن بھائی کم از کم نصف درجن سے بڑھ کر ہوں گے۔شبانہ کی آنکھوں میں غضب کی ذہانت اور سوالات نظر آتے ۔وہ ہمیشہ صاف ستھری ہوتی،لیکن ...

Read More »

نُوراں ۔۔۔ آغا رفیق ؍ ننگرچنا

’’ ہائے۔۔۔ پَپُوسائیں! تم تو خواہ مخواہ ڈر رہے ہو۔۔۔ چھوری تم پر مری جارہی ہے مری۔۔۔‘‘ رَبُو نے آگ کے الاؤ میں لکڑی آگے کرتے ہوئے کہا۔ پَپُو سائیں نے ایک نظر رَبُوکو غور سے دیکھا۔ اُسے گھورتا دیکھ کر پَپُو نے کہا،’’ قسم رَب کی۔۔۔ میں چھوری کو دیکھتا ہوں نا۔۔۔ اُس کی نظر تم پر پڑتی ہے ...

Read More »

تضاد ۔۔۔۔ آدم شیر

بچپن سے لڑکپن میں داخل نہیں ہوا تھا کہ اُسے وہ زخم ملے جو ظاہر سے کچھ ہفتوں بعد غائب ہو گئے مگر باطن میں ہمیشہ کے لیے ناسور بن گئے جنہیں وہ کریدتا رہتا ہے اور اِن میں سے رِستے خون سے اذیت پرستی کا پودا پروان چڑھاتا رہتا ہے یہاں تک کہ اس کا دل اوروں کے لیے ...

Read More »

آدم کاجئی ۔۔۔ جاویدحیات

سورگدل گراؤنڈتماشیوں سے کھچاکھچ بھر چکا ہے۔واپڈا کی دیوار کے اُوپر اور تاج محل سنیماکی چھت تک لوگ بیٹھے ہیں۔ آج ینگ بلوچ اور محمڈن فٹبال کلب کے مابین فائنل میچ کا سِکنڈہاف شروع ہو چکاہے۔باتیل کا سایہ پوری طرح گراؤنڈ میں پھیل گیا ہے۔ریفری کی سیٹی اور کمنٹری کرنے والے لاؤڈ اسپیکروں کا شور بڑھتا ہی جارہا تھا۔ہرشخص اپنی ...

Read More »

پہلا آدمی ۔۔۔ پروفیسر ڈاکٹر مزمل حسین 

پروفیسر وقار تے سمیرا دی عمراں وِچ وَڈا فرق ہئی۔سمیرا یاھرویں جماعت اِچ پڑھدی ہا ،جڈاں جو پروفیسر وقار ڈھلدی عمراں دا بندہ ہئی اُوندی جماعت ءِ چ اردو پڑھاونٹر آیا۔پروفیسر وقار ہک اعلی استاد ، نقاد، شاعر تے دانشور تے طور تے یکے وَسیب ائچ اپنڑی سنجاننڑرکھینداہئی، وَلا اُوندے لیکچر ڈیونٹر دا اَندازوِی طلبا ء کو ں اُوندا گرویدا ...

Read More »

دست یکے منی ۔۔۔ عبدالوحید عاقب

من یک دَپترے آ صاحب ئے مُنشی اِتنت۔ مدام ئے وڑاھمک بیگاہ وتئی ڈیوٹی دات۔ کم کم آ مردم آھگا اِت اَنت برئے چار، برئے دہ مردم بیگاہ آ روچے اَتک۔ اسلام و علیکم!۔ بیا واجہ ! اِد ا نندتئی طبعیت او مردم او عالم چون اَنت۔ درست جوڈ او وش آں۔ صاحبا من گشت ، مُنشی ! واجہا آپے ...

Read More »

 اکٹوپک کاجن ۔۔۔۔ فرزانہ خدرزئی

دو دن سے اس کے پیٹ میں شدید درد اٹھ رہا تھا۔درد کی شدید ٹیس پیٹ میں اٹھتی اور پھر آنکھوں کے سامنے اندھیرا چھا جاتا۔شادی کو دو ہی سال ہوئے تھے ۔حمیداللہ کا رویہ بہت اچھا تھا ۔البتہ ساس ساری کسر پوری کردیتی ۔ایسے میں حمیداللہ خاموش تماشائی کا کردار بن کر بس تماشا ہی دیکھا کرتا۔ فہد ابھی ...

Read More »

اور شہرہی الٹا ہوگیا۔۔۔۔۔۔ منظورکوہ یار/ ننگرچنا

صبح ہوچکی تھی ۔سرخ سورج آہستہ آہستہ مشرق سے ظاہر ہورہا تھا۔پہاڑیوں پرٹھنڈی بادِسحرکے جھونکے رواں تھے۔چاروں طرف مختلف پرندے چہچہارہے تھے۔ قلندرشہباز چہارستونی چبوترے پراپنے تمام تر جاہ وجلال کے ساتھ کھڑاتھا۔نیچے کھڑے تھے دورو نزدیک کے سب طالبانِ معرفت اور مریدین،جو اُس کی لب کشائی کے منتظر تھے۔ قلندر شہباز،جس کی گردن گلے میں پڑے گلوبند کے سبب ...

Read More »