Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » Javed Iqbal (page 240)

Javed Iqbal

غزل ۔۔۔ ساحر لدھیانوی

تم اپنا رنج و غم ، اپنی پریشانی مجھے دے دو تمہیں غم کی قسم، اس دل کی ویرانی مجھے دے دو یہ مانا میں کسی قابل نہیں ہوں ان نگاہوں میں بُڑا کیا ہے اگر یہ دُکھ ، یہ حیرانی مجھے دے دو میں دیکھوں تو سہی، دنیا تمہیں کیسے ستاتی ہے کوئی دن کے لیے اپنی نگہبانی مجھے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ اکرم خاور

میں نے اُڑتا غبار دیکھا ہے اپنی مٹی میں پیار دیکھا ہے زندگی کے ہر ایک منظر کو میں نے تو بے قرار دیکھا ہے اپنی دھرتی پہ زندگی کے لئے ننگے بچوں کو خوار دیکھا ہے پانی کی بوند بوند کو ترسے پنچھیوں کو بیمار دیکھا ہے میرے ہاتھوں میں اسلحہ دے کر حکمراں کو تجار دیکھا ہے برہنا ...

Read More »

غزل ۔۔۔ وحید نور

صبر کی اِنتہا کوروکوں میں کیا دِلوں کی صدا کو روکوں میں اِک جہنم بھڑک اُٹھا مُجھ میں کیوں دلِ مُبتلا کو روکوں میں اپنی محرومیوں پہ برہم ہیں کیسے خلق خدا کو روکوں میں بڑھ رہا ہے ہجوم تنہائی کس طرح اِس بلا کو روکوں میں اپنے اِک ہاتھ میں دیا رکھ کر دوسرے سے ہوا کو روکوں میں

Read More »

غزل ۔۔۔ احسان اصغر

جانے کیا دیکھتی ہے ۔۔۔آئینہ رو ہوتی نظر بین کرتی ہوئی آواز …لہو ہوتی نظر گھر کی سیلن زدہ دیوار پہ لٹکی تصویر اور وابستہ آئینِ نمو۔۔ہوتی نظر میں تو بے ڈھال تھا بے ڈھا ل کہاں بچ سکتا؟ تیر کی طرح تھی پیوستِ گلو ہوتی نظر زخم پر دستِ رفو گر کی کہاں چلتی ہے تو جو آتا تو ...

Read More »

غزل ۔۔۔ وصاف باسط

کپکپی، خوف طاری، ہے جینے میں ڈر جب سے دیکھا ہے اپنے ہی سائے میں ڈر تیرگی ننگے پاؤں ہے نکلی ہوئی چھپ گیا ہے کسی ایک کونے میں ڈر اور پھر ایک دن سانحہ یہ ہوا آنکھ سے گر گیا تھا اندھیرے میں ڈر روشنی کانپتے کانپتے سوگئی رات نے یوں بچھایا تھا رستے میں ڈر میری دھرتی کے ...

Read More »

ریشم کا کیڑا ۔۔۔ ثروت زہرا

میں ریشم کے کیڑے کی طرح اپنے ہی جنون کے چپچپاتے ریشمی خواب کے تاروں میں لپٹتی جا رہی ہوں تار جو بڑھتے وقت پر اپنی دھار تیزکرنا جانتے ہیں اور لمحہ بہ لمحہ میرا وجود ان ریشمی کاٹ دار دائروں کے بیچ سلتا جا رہا ہے میرے جنون سے ہی مرے وجود کا دم گھْٹتاجا رہا ہے

Read More »

غزل  ۔۔۔ بلال اسودؔ

خیال و خواب بہت، خواہش و سوال بہت مگر ہم ایسوں کو لمحے کا بھی وصال بہت میں اپنے آپ سے گم اور تو اپنے آپ میں گم مجھے ہے عشق بہت اور تجھے جمال بہت اَپر کلاس کے تلوؤں کو چاٹنے والے خدا کے سامنے آتے ہیں تو مجال بہت ارے! یہ وقت گزاری بھی کیا مصیبت ہے جو ...

Read More »

Sixth Sense — Bilal Aswad

دیکھنا اپنے اونچے محلات کی اونچی اونچی دیواروں کے اوپر لگی خار دار باڑ کی گول عینک سے اس پار کے چھت بہ سجدہ گھر وندوں کی دیواروں کی خستگی سننا اپنے بنائے ہوئے سٹوڈیو میں دھمک والے سپیکر زکی فل والیم میں ہنی سِنگھ کے گانے چلا کر زمیں سے نکلتی فلک کے ستاروں بھرے گیٹ پر دستکیں کوٹتی ...

Read More »

غزل ۔۔۔ رضوان فاخر

زہر سانسیں پی رہا ہے ہر گھڑی جانے کب ہو خاک پنہاں زندگی جل رہی ہے انگلیوں کے درمیاں مدتوں کی بے وجہ حیرانگی بے چراغ و نور ہے تخت_ رواں ہمسفر ہر گام ہے بیگانگی عکس اس کا تیرتا تھا آب پر اور زیرِ آب تھی دیوانگی فاخر اسکا پاس رکھنا ہے تمہیں یہ کٹورا برف بھی ہے آگ ...

Read More »

نظم ۔۔۔ انیتا یعقوب

زندگی آ تجھے سنواروں میں تو جو اک عمر سے اداسی میں شکوہ بیداد بن کے پھرتی تھی ایک افسردہ سی حیا بن کر آ تری زلفوں کو سنواروں اور تیرے ہر خواب کو کروں پورا زندگی آ تجھے سنواروں میں دیکھ لے ضبط آرزو سے اب دل کے آئینے سے لہو پھوٹا تیرا تن من نکھار کر رکھ دوں ...

Read More »