Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » Javed Iqbal

Javed Iqbal

چند برس ہی ہوتے ہیں ۔۔۔ ابرار احمد

چند برس ہی ہوا کرتے ہیں دوڑ لگائیے آگے نکلیے اور جان جائیے اچھل کود بے معنی ہوا کرتی ہے چار لفظ ہی لکھ لیجیے کچھ کتابیں پڑھ اور چھاپ لیجیے دنیا کو الٹ پلٹ دیکھیے بارشوں میں چھینٹے اڑاتے ہوئے ان اطراف کا پھیرا لگائیے جہاں آپ کی آوازیں ہمیشہ کے لیے خاموش ہوچکیں   بچوں اور پھولوں موسموں ...

Read More »

کسان کی کتھا ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

ھل چلا کر سوکھی دھرتی کے سینے سے اناج کا سونا نکالتے ہیں کپاس کی چاندی اگانے کو وہ اپنا پسینہ بہاتے ہیں ان کے اپنے بالوں میں اترتی چاندی کس نے دیکھی کھیت کو پانی دینے کو راتوں کی نیند گنواتے ہیں کبھی بیلوں کی جگہ خود ہی ھل میں جت جاتے ہیں جب گھٹنوں سے لپٹتی کیچڑ میں ...

Read More »

مہر نگار

منی مرادانی گوانزگاَ یک وسوسے واب کپتگ یک جیڈگ ئے پشت کپتگ یک سواس ئے تاہ ئے سستگ ھکگ رندا کپتگ دل چہ مہراں سر گوستگ ارساں یک تگرد ئے گوپتگ تگرد درامداں چیر گپتگ پیر  زالابانوری سر ئے گوپتگ بوہ ئے دیار اشنگ بوتگ چراگاں یک راہ سرے رْپتگ رْپتگ ایں راہ سر گار بوتگ شوھاز ادگے شوھاز ئے ...

Read More »

پھتو شاہ قبرستان ۔۔۔ ثروت زہرا

ماں میں آج پھر کاری ہو کے ہڈیوں میں تبدیل ہونے کے لیے دفن کردی گئی۔   پھر تیرے گداز دل سے بین چرا کے سماجی مراتب کے سودے طے کر لیے گئے   بہن کی آنسوؤں سے ملکیتوں کے سبز صحن تازہ کر لیے گئے   باپ کی دعا ئیہ ہتھیلیاں عزت کی ستلیوں سے باندھ دی گئیں میرا ...

Read More »

گلناز کوثر

مراجعت   میں انسان ہوں اور میں انسان ہونے سے گھبرا گیا ہوں ……۔ میں گھبرا گیا ہوں بہت چلچلاتی ہوئی دھوپ سے ……۔ شور کرتے ہوئے شہر سے…۔ بھوک سے……۔ اور گلے میں پھنسے آنسوؤں کی چبھن… درد کی لہر سے جو مسلسل مرا جسم جکڑے ہوئے ہے کروں کیا دہکتی ہوئی سرخ چنگاریوں کا جو میرے لہو میں ...

Read More »

طمانچہ ۔۔۔ صباحت عروج

درزی بھائی!۔ یہ لوکپڑا۔۔۔۔۔کالاکپڑا روشن دن کے عین مخالف اندھیرے سا کالا اور اس کپڑے سے اک سی دو برقعہ ماں کہتی تھی دہی کی عزت ہی عزت ہے اپنے آپ کوآپ سنبھالو وقت ہی کچھ ایسا ہے بھائی!   اور بچے گا جتنا کپڑا اس سے سی دو اور اک برقعہ۔۔۔   برقعہ میری زینب کا نہیں جی کپڑا ...

Read More »

مجھے گمان ہی رہا ۔۔۔ گلناز کوثر

مجھے گمان ہی رہا نئی سویر کے  بطن سے پھوٹ کر بہے گی نور کی ندی فضا میں تیرنے لگیں گی چاہتوں کی تتلیاں خزاں کا خول توڑ کر بہار سر اٹھائے گی مجھے گمان ہی رہا ہرے بھرے جہان کا اگرچہ میرے سامنے سروں کی فصل کٹ رہی تھی آسمان سرخ تھا ہوا کی بند مٹھیوں میں نفرتوں کے ...

Read More »

وقت کی مسافت پہ ۔۔۔ گلناز کوثر

یاد ہے اْس گھڑی شام تیزی سے گرتی چلی جا رہی تھی درختوں کے پیچھے اجالے کے ریزے لڑھکنے لگے تھے سیہ غار کی سمت ہم چْن رہے تھے خموشی کی بکھری ہوئی کرچیاں وقت کی ایک لمبی مسافت پہ رکھی تھی یادوں کی گٹھڑی ٹھٹھرتے ہوئے دن کا ٹکڑا جو بے وجہ آنکھوں میں چبھنے لگا تھا ندی کے ...

Read More »

اشرف المخلوقات ۔۔۔ انجیل صحیفہ

زمین ہمارے اعمال کے بوجھ سے اپنے اندر دھنستی جارہی ہے ہماری گردنوں میں انا اور غرور کا کالر لگا ہوا ہے ہم کسی کو بھی ارنگڑی مار کر گرانے میں عار محسوس نہیں کرتے ہمارے پاس دلوں کو چھلنی کرنے والی باتوں کااچھا خاصہ سٹاک ہے ہماری زبانیں خنجر کی طرح تیز ہیں اور ہماری آستین میں چھپے ہمارے ...

Read More »

 بلال اسود

اک گھر کا کھنڈر ہونا گراں کوئی نہیں ہے ماں کوئی نہیں ہے تو اماں کوئی نہیں ہے   عزت ہو! تمہیں کون رکھے گا سرِبازار ا? جاؤ مرے پاس یہاں کوئی نہیں ہے   بے سود نہیں دور تلک ساتھ میں چلنا اور ہاتھ پکڑنے میں زیاں کوئی نہیں ہے   کیا کچھ بھی نہیں کیفِ تیقّن کے علاوہ! ...

Read More »