مضامین

جنین ئے زندگی او مئے عجبیں دنیا

مئے دنیا بلاہیں، مئے دنیا ءَ چہ منی مطلب بلوچستان۔۔۔ بلوچستان مزن انت۔۔۔ بزانکہ سئے بلوچستان۔۔۔ ہما بلوچستان کہ افغانستان ءُ ایران ءَ انت آیانی چاگردی زند ءِ باروا منی کِرّا سرپدی نہ بوہگ ءِ برابر انت۔ منی دل ءِ مراد بوتگ کہ من بگرداں، اے جاہاں بگنداں، بلے کسانی ...

مزید پڑھیں »

چشم بینا

ہم ماں، باپ اور بہن بھائی کے علاوہ بھی بہت کچھ ہیں؛ اس کا احساس گواہیوں کے زمانے سے قبل ہو جائے تو تمام گواہیاں سچ ہوں اور گناہ کی جھولی خالی برتن جیسی پڑی رہے گی۔ بس ایسی صورت میں مالک جو چاہے اپنی freewill سے اس کی بھرائی ...

مزید پڑھیں »

امن

۔ بہت سال بیتے ہمارے گھر میں ایک رسالہ چین با تصویر کے نام سے آیا کرتا تھا۔ اس کے ایک شمارے میں ٹرین کا ذکر تھا جو شنگھائی سے کینٹن جا رہی تھی۔ لمبا سفر تھا راستے میں طلوع آفتاب کی گھڑی آئی۔ ٹرین کو روک دیا گیا اور ...

مزید پڑھیں »

ضیاء کا مارشل لاء ، مائنس ون اور پھلجڑیاں

حقیقت فقط اتنی ہے کہ گزرے اتوار کی صبح اُٹھا تو احساس ہوا کہ آج 5جولائی ہے۔اس حوالے سے جولائی 1977کی یاد آگئی۔ذہن میں کسی فلم کے سین کی طرح وہ لمحات گھومنا شروع ہوگئے جب تین ’’دانشور‘‘ بزرگوں کے ہمراہ بیٹھ کر جنرل ضیاء کی ’’میرے عزیز ہم وطنو…‘‘ ...

مزید پڑھیں »

خوش گمانیوں کا سفرِ ناتمام

موضوع اس کالم کا کچھ اور سوچ رکھا تھا۔اتوارکی صبح اُٹھا تو جانے کیوں یاد آگیا کہ آج پانچ جولائی ہے۔ یہ دن 1977میں بھی آیا تھا۔زندگی کے کئی برس اس کے اثرات سے نبردآزما ہونے میں خرچ ہوگئے۔اپنے تئیں جو ’’مزاحمت‘‘ برپا کی تھی اس کے حوالے سے خود ...

مزید پڑھیں »

بلوچستان میں کتاب کا ”مالی “۔ ۔۔ منصور بخاری

ضیاءالحق کا مارشل لا تھا ۔ سخت پابندیاں تھیں۔ جلسہ جلوس ، تقریر تحریر، اورتنظیم سیاست سب ضیا کے بوٹوں تلے۔ سارے سیاسی کارکن جیلوں میں ۔ کوڑے سرِ عام مارے جارہے تھے ۔اخبارات پہ بدترین سنسر شپ جاری تھا۔ ہر روز اخبار پہلے حاکم کو دکھایا جاتا، منظوری ہوتی ...

مزید پڑھیں »

میاں محمود

27 نومبر1927……..3 جولائی 1999 ابھی ماضی قریب میں پاکستان کے اندر انقلابی سیاست کی مست جوانی دیکھنی ہوتی تو میں آپ کو فیصل آباد جانے کا کہتا۔ وہاں کچہری بازار میں ” گلی وکیلاں“ نام کی ایک تنگ گلی ہے۔ ایک سادہ مگر کشادہ دو منزلہ مکان میں ادھیڑ عمر ...

مزید پڑھیں »

سیمیں درانی اور ان کا فنِ افسانہ نگاری

راقم الحروف نے کچھ عرصہ پہلے فیس بُک پر سیمیں خان درانی کی نظموں کے مختلف پہلوؤں کا مندرجہ ذیل انگریزی الفاظ میں جائزہ لیا تھا: “Seemeen’s portraits of life around her, both in her fiction and poetry, are always supremely well designed and full of stark realism. And she ...

مزید پڑھیں »

میاں محمود احمد

27 نومبر1927……..3 جولائی2002 ابھی ماضی قریب میں پاکستان کے اندر انقلابی سیاست کی مست جوانی دیکھنی ہوتی تو میں آپ کو فیصل آباد جانے کا کہتا۔ وہاں کچہری بازار میں ” گلی وکیلاں“ نام کی ایک تنگ گلی ہے۔ ایک سادہ مگر کشادہ دو منزلہ مکان میں ادھیڑ عمر کا ...

مزید پڑھیں »

پارٹی ممبرشپ حلف

100 سال پہلے بلوچستان کی سیاسی پارٹی کا ممبر بننے والے کا حلف: ” میں اللہ کو حاضر ناظر سمجھ کر اقرار کرتا ہوں کہ آج سے میں خلقِ خدا اور ملک کی خدمت کو اپنا اولین فرض سمجھوں گا۔ غریبوں ، کسانوں اور افتادوں کی خدمت اور ان کے ...

مزید پڑھیں »