مضامین

خوش گمانیوں کا سفرِ ناتمام

موضوع اس کالم کا کچھ اور سوچ رکھا تھا۔اتوارکی صبح اُٹھا تو جانے کیوں یاد آگیا کہ آج پانچ جولائی ہے۔ یہ دن 1977میں بھی آیا تھا۔زندگی کے کئی برس اس کے اثرات سے نبردآزما ہونے میں خرچ ہوگئے۔اپنے تئیں جو ’’مزاحمت‘‘ برپا کی تھی اس کے حوالے سے خود ...

مزید پڑھیں »

بلوچستان میں کتاب کا ”مالی “۔ ۔۔ منصور بخاری

ضیاءالحق کا مارشل لا تھا ۔ سخت پابندیاں تھیں۔ جلسہ جلوس ، تقریر تحریر، اورتنظیم سیاست سب ضیا کے بوٹوں تلے۔ سارے سیاسی کارکن جیلوں میں ۔ کوڑے سرِ عام مارے جارہے تھے ۔اخبارات پہ بدترین سنسر شپ جاری تھا۔ ہر روز اخبار پہلے حاکم کو دکھایا جاتا، منظوری ہوتی ...

مزید پڑھیں »

میاں محمود

27 نومبر1927……..3 جولائی 1999 ابھی ماضی قریب میں پاکستان کے اندر انقلابی سیاست کی مست جوانی دیکھنی ہوتی تو میں آپ کو فیصل آباد جانے کا کہتا۔ وہاں کچہری بازار میں ” گلی وکیلاں“ نام کی ایک تنگ گلی ہے۔ ایک سادہ مگر کشادہ دو منزلہ مکان میں ادھیڑ عمر ...

مزید پڑھیں »

سیمیں درانی اور ان کا فنِ افسانہ نگاری

راقم الحروف نے کچھ عرصہ پہلے فیس بُک پر سیمیں خان درانی کی نظموں کے مختلف پہلوؤں کا مندرجہ ذیل انگریزی الفاظ میں جائزہ لیا تھا: “Seemeen’s portraits of life around her, both in her fiction and poetry, are always supremely well designed and full of stark realism. And she ...

مزید پڑھیں »

میاں محمود احمد

27 نومبر1927……..3 جولائی2002 ابھی ماضی قریب میں پاکستان کے اندر انقلابی سیاست کی مست جوانی دیکھنی ہوتی تو میں آپ کو فیصل آباد جانے کا کہتا۔ وہاں کچہری بازار میں ” گلی وکیلاں“ نام کی ایک تنگ گلی ہے۔ ایک سادہ مگر کشادہ دو منزلہ مکان میں ادھیڑ عمر کا ...

مزید پڑھیں »

پارٹی ممبرشپ حلف

100 سال پہلے بلوچستان کی سیاسی پارٹی کا ممبر بننے والے کا حلف: ” میں اللہ کو حاضر ناظر سمجھ کر اقرار کرتا ہوں کہ آج سے میں خلقِ خدا اور ملک کی خدمت کو اپنا اولین فرض سمجھوں گا۔ غریبوں ، کسانوں اور افتادوں کی خدمت اور ان کے ...

مزید پڑھیں »

چگھا بزدار۔۔ ایک بڑا شاعر

شاعری صرف جملوں کے نثری ترکیب کو بدلنے کا نام نہیں بلکہ شاعری تب شاعری ہے جب اسکے اندر سے ایک مقصد ایک فکر ہمہ وقت روشنی کے کرنوں کی طرح چھن چھن کر باہر آرہی ہو یا نسیم سحری کی طرح معطر اور دھیمی خوشبو سے احساسات کو اپنی ...

مزید پڑھیں »

لکھت لکھواتی ہے

میں ایک پیشہ ور لکھاری ہوں۔ منظروں سے اپنی لکھت کشید کرتا ہوں۔خاموشی میں دبی سسکیوں کو سنتا ہوں،آہوں کا مطلب سمجھتا ہوں،بند آنکھوں کے خوابوں کو دیکھ سکتا ہوں،درد سے بلکتے انسانوں کی نہ نکلنے والی چیخوں کو سنتا ہوں اور پھر انہیں لکھتا ہوں۔ میں ان آنسووں کو ...

مزید پڑھیں »

محبوب خزاں

ایک محبت کافی ہے باقی عمر اضافی ہے لکھنے والوں کے لئے محبوب خزاں نے کیا پتے کی بات ایک شعر میں سمودی۔ میَں تمھیں کیسے بتاؤں کیا کہو کم کہو، اچھا کہو، اپنا کہو استاد محبوب خزاں کی شخصیت خوب تھی، وہ مشاعروں کے شاعر نہ تھے۔ ان کا ...

مزید پڑھیں »

”دم گھٹ رہا ہے ، ماں“

کورونا نے دنیا میں تباہی مچارکھی ہے۔ روزانہ بے شمار لوگ مرنے لگے، خاندان برباد ہوئے ۔پسماندگان کی چیخوں نے دھرتی ہلا کر رکھ دی ۔ موبائل فون تعزیتوں کا لاﺅڈ سپیکر بنے ۔اور تازہ قبروں سے قبرستانوں کے پیٹ نو مہینے جتنے ہوتے گئے ۔ اپنے خطے کی بات ...

مزید پڑھیں »