شاعری

اینٹی امپیریلزم

پندرھویں صدی، پرتگیزیوں کابلوچستان پہ حملہ، اور بہادر ہمل اپنی تلوار سے: تیغ سپاہانی مں ترا بچی گی پیاست مں ترا بچی پیاست و دریں دتگی ہورانی وختا گجریں بھوفانی تلا نمبانی وختا مں کباہاں ابریشمیں بہادروں کی تلوار! تجھے میں نے بیٹے کی طرح پالا بیٹے کی طرح رکھا، ...

مزید پڑھیں »

مخمصہ

‏ شش وپنج پنج وشش اس بزرگ سن دوست کو کیا درپیش تھا باربار پوچھنے کے بعد بول پڑا اپنے آپ کو عطاشاد کا مصرع سنارہاہوں: کس نے کہا تھا گھر لب دریا بنائیے

مزید پڑھیں »

درد

دَرد مئے زردا راہی اِنت یا یاتانی ٹیکیّاں یا شعرانی آیاتاں یا بیلانی تژناں شہ یا ارسانی تسبیحاں یا بچکنداں زہگے ئے یا پیرینی اُپّاراں درد مئے زردءَ راہی اِنت دردءَ اصلا موسم نیست

مزید پڑھیں »

حبشی

ہمیشہ ایک ایسے آدمی کا قتل ضروری ہے جو ہمیں عزادار رکھے میں کالے کپڑے پہنوں اور تمہارے سائے جمع کروں یہاں تک کہ صبح کے آٹھ بجے رات ہوجائے رنگوں بھری بالٹی اٹھا کر خود پر انڈیل دوں میں ایک حبشی ہوں میری جلد سے پسینہ نہیں نکلتا بلکہ ...

مزید پڑھیں »

16ویں صدی۔۔۔۔ انٹی امپیریلزم

ہملآ گوئشتیش بیا فرنگی سانگے بہ کاں جن فرنگانی ہمل آ ہچی دوست نہ بنت نہ چم شوذنت او نئیں ھذائی نامہ گرنت پشک کونڈان و نافغانی کنڈاش دراں پرتگالیوں نے ( اپنے خلاف جنگ کے ہیرو) ہمل سے کہا آئو ایک یورپی لڑکی سے شادی کرلو ہمل کو فرنگی ...

مزید پڑھیں »

سیڑھیاں

عشق وشق کچھ نہیں اداوفا نہیں نہیں وصال وصل کچھ نہیں کمال کی تکمیل کو جمال کے جمیل کو وسیلے چاہییں زینے چاہییں اس نے تم سے پیارکیاہے اپنی شاعری کی تازگی کی برقراری کے لیے

مزید پڑھیں »

انٹی امپیریلزم

پونے دوسوسال قبل بلوچ حکمران ، محراب خان نے انگریز کالونیل افسر مسٹربرنز کےدھمکی آمیز خط کا یہ جواب دیا : بگوئشتہ شیرنرہمچوش تو برنیس برسرت کن ہوش زیادہ پیش من مخروش اچ آ روچا کہ برتختا نشتہ گوں وتی بختا رسول اللہ گواہ استیں مناں گوں کافرا کستیں ببر ...

مزید پڑھیں »

بچوں کو بوڑھا ہونے کی لوریاں نہ دو

آنکھیں کھڈوں میں ٹائی ڈھیلی وائیٹ شیو بڑھی ہوئی، بولان کی گولائیاں چڑھتی دو انجنی ٹرین جیسی گہری آہیں، سر کے قحط مارے بال خشکابے میں باجرے کی فصل جیسے پریشان بدحال پشیمان، تین تباہ کن عناصرکا پہلے ہی بتادیاتھا: ریت کا سفر غربت کی مہمان نوازیاں اور بڑھاپے کی ...

مزید پڑھیں »

غزل

کِشتہ ما کہ تئی عکسے چَمّ ءِ تہ ءَ شاه جنان اِنت پدا سنْجے چَمّ ءِ تہ ءَ ہرّوچ میم ءِ گُلاب ءَ کہ سوچان کنت روک کُت ءُ تو شُت ئے وابے چَمّ ءِ تہ ءَ تئ جتائی مُدام جِک جَنت بے کساس کپتہ چو کہ گُش ئے بوچے ...

مزید پڑھیں »