پہ وتی ارواح افشاں جانے نامایک غزلے

کْجا اِنت گوات و تلارانی ڈیہہ، کْجا منی دوست؟

تئی توار اِنت؟ بریں جْستہ اِنت خدا منی دوست

تو راہ ئے پیما مناں گوں اوار ئے ہر وہدہا

تہاری، چو کہ تہاریں شپ ئے تہا منی دوست

اے سیاہیں ڈَل پہ تئی نیمگہ روَنت وابا

اے سہریں ریک نبشتہ کننت وفا منی دوست

گْمان ئے ماہا چہ دَر کائے تَو وتی رنگا

گْلانی وَش بَوئے پیماروئے پدا منی دوست

گْوزْیت اے کشت وکشارانی موسم ئے ساہِگ

گْوزَیت ساہ ے چہ ساہابیا بیا منی دوست

ماہنامہ سنگت کوئٹہ

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*