Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » 2015 » December

Monthly Archives: December 2015

دریگے شاعرے بوتیناں ۔۔۔۔ تاج بلوچ

من اگاں شاعرے بو تیناں نو دءُ مہکان تئی مہپر ئے و شبو ئے زہیران شڑینت انت و مَسے ٹاہینت ات او نبشتہ کتگ ات لچہے پہ تئی چمانی گدارئے ناما ’’ تو کہ چو تران کنئے کہچراں آہو ءُ بیکانی سروزئے زیمر او دو چاپی سرا زورنت رُدنت بال کننت سنج ٹہیننت او کرو جنت ءُ ٹہینان کننت‘‘ او ...

Read More »

ورثہ ۔۔۔ نوشین قمبرانڑیں

رژنا کے نام  مری آنکھوں نے دیکھے ہیں وہ دلکش موسموں کے خوشنما منظر عطا کی نظم کی مانند کسی انجان سیارے سے میرے شہر کے سینے پہ اترے تھے۔ میں اُس رومانوی دنیا کی خواب آور ہواؤں کی نمی، کیسے تمہیں محسوس کروا پاؤں گی رژنا، بتاؤنگی تمہیں کیا ؟ کون تھے ہم ، مہر کے بچے؟، کہاں کی ...

Read More »

غزل ۔۔۔ کرامت بخاری

نہ سمجھا ہوں نہ سمجھایا گیا ہوں کسی الجھن میں الجھایا گیا ہوں میں حیراں ہوں کہ اِس حیرت کدے میں کہاں تھا اور کہاں لایا گیا ہوں سمٹ سکتی ہے کیسے میری وسعت مثال دشت پھیلایا گیا ہوں مجھے لگتا ہے اِس کون و مکاں میں کبھی پہلے بھی میں آ یا گیا ہوں بگولا ہوں سِر صحرائے ہستی ...

Read More »

ھاک ءِ وشبو ۔۔۔ غنی پہوال

1 منی مہرانی بہشتیں ہنکین ماتیں سرزمین تئی ھاک ءِ جوھر یں ثمر یک انچیں آبناکیں وشبوے کہ چہ مجّتی ربیدگانی دل ءَ شنگیت او مارگانی آسمان سلامیں استالاں پہ نہمتے جان شود کنت ھانی ءِ دردانی مھرمیں نوانا وھدے ماتیں سرزمین ءِ زہیراں ہم سر کش ات شے مرید ا واہگانی نکشیں بند ءُ بوگانی سرا ہپتاد ءُ ہپت ...

Read More »

غزل ۔۔۔ وصاف باسط

چار سو خوف ہی میں رکھی ہے روشنی تیرگی میں رکھی ہے میں نے خواہش لپیٹ کر اپنی ایک صندوقچی میں رکھی ہے موت سے اب نہیں ہے ڈر کوئی موت تو زندگی میں رکھی ہے وہ کسی کو نہیں ملے گی یہاں سندری جھونپڑی میں رکھی ہے سانس رکھی نہیں ہے طوطے میں جان میری پری میں رکھی ہے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ عبداللہ بلال

دھیمی دھیمی سی ہوا ہلکا دھواں کیوں نہ جی لوں میں یہ کچھ پل کا دھواں کیا ہوا دراک مناظر کا مجھے راہ سے چھٹتا ہی نہیں کل کا دھواں ساحلوں کو ہے دعا آبِ رواں تپتے صحرا میں سدا جل کا دھواں شب کی انگیٹھی میں دہکا کے خمار میری آنکھوں سے فقط چھلکا دھواں روشنی خود ہے اندھیرے ...

Read More »

زود قدم ۔۔۔ ڈاکٹر منیر رئیسانڑیں

( دانیال طریر کے لیے) نئے،لہجے سے آسودہ نکھرتی فکر سے زیبا چمکتے ، جاگتے، لہریں اٹھاتے نئے ملبوس خوابوں کو عطا کرتے ہوئے الفاظ سے آراستہ ہوکر تمہاری نظم شانوں پر تمہیں اپنے اٹھائے صدا اور برق کی رفتار پاؤں میں سجائے بہت ہی دور جانے کو کھڑی ہے طریر! اب میرؔ کی بگھی بہت آہستگی سے تم سے ...

Read More »

غزل ۔۔۔ قندیل بدر

بگولے آج دیکھیں گے تماشا مجھے گھنگرو کوئی پہنا رہا ہے فضا سب چھلنی چھلنی ہو گئی ہے کوئی کیوں اس طرح چلا رہا ہے پگھل جائے گا اس سے آسماں بھی جو سورج دل میرا دہکا رہا ہے مرے ماتھے پہ اپنے ہونٹ چھوڑے نہ جانے کس نگر کو جا رہا ہے مری چیخوں کے لاشے بچھ رہے ہیں ...

Read More »

الحاج نجمی

اپنے جذبوں کی وہ تصویرمیں واپس لوں گا اپنے خوابوں کی وہ تعبیر میں واپس لوں گا اپنے افکار کی جاگیرمیں واپس لوں گا اپنے الفاظ کی توقیر میں واپس لوں گا تم نے چھینی ہے جو پابند سلاسل کرکے اپنی دستارِ جہاں گیر میں واپس لو ں گا تم نے دی ہے مجھے جس جُرم صداقت کی سزا اسے ...

Read More »

بے بس زندگی ۔۔۔ وصاف باسط

لفظ مجھ کو ڈستے ہیں نظم ناگ بنتی ہے چیختی ہیں سب غزلیں رات اپنی آنکھوں سے مجھ پہ وار کرتی ہے دن بھی آگ بنتا ہے اور مجھے جلاتا ہے روز نیند میں میرے خواب رقص کرتے ہیں شا م میرے چہرے پر پھیرتی ہے خوں اپنا ایک چاند تھا میرا وہ بھی دیکھ کر مجھ کو قہقہے لگاتا ...

Read More »