Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.

محترم و مکرم آغا گل صاحب

اسلام علیکم ۔ آپ کا ارسال کردہ ماہتاک ” سنگت“ کا سالنامہ ملا۔ حکم سر آنکھوں پر ۔ ایک بالکل تازہ اور نئی غزل آئندہ شمارے کے لےے حاضر ہے۔ بڑی دیر بعد آپ کی معرفت ” سنگت“ سے آشنائی ہوئی۔ رسالہ کی اُٹھان اچھی ہے۔ خوب محنت کی گئی ہے۔ دسمبر2014 کے ” سنگت“ میں شائع ہونے والا مواد پڑھنے کے قابل ہے۔ بہت اچھا انتخاب ہے۔ نظم غزل مضامین اور افسانے سب پڑھ ڈالے۔ خوب مزا رہا۔ شاعر علی شاعر کی بھیجی ہوئی اردو غزل کا عالمی انتخاب تین جلد پڑھ کر ختم کی ہی تھی کہ ” سنگت “ مل گیا۔ خوب دل لگا رہا۔
غنی پہوال کی نظم ” ریحانہ جباری کے نام “ بہت اچھی لگی۔ نظم پڑھنے کے بعد جُدائی کا اَن مٹ نقش سامنے آتا ہے اور طبےعت اُداس ہوجاتی ہے ۔ عبدالنافع غیور ایڈووکیٹ نے پروفیسر عزیز مینگل کے بارے ” صوت باتیں اور یادیں “ عنوان سے پروفیسر عزیز مینگل کی یادوں اور باتوںکو خوب دُہرایا ہے ۔ وحید زہیر اور عابد میر نے گل خان نصیر کی شاعری کا اچھا تجزیہ کیا ہے۔ ڈاکٹر غلام سرور ساگر کی نظم ” کوئی چراغ جلاﺅ بڑا اندھیرا ہے “۔ بار بار پڑھنے کو ملتی ہے ۔ بہت لُطف دیتی ہے۔ یہ نظم مصطفی زیدی تیغ الہ آبادی کی یاد دلاتی ہے ۔ شاہدہ حسن کی غزل ، آسناتھ کنول کی غزل اور فہمیدہ ریاض کی نظم تینوں اچھی لگیں۔
خطوط کی دُنیا بڑی مختصر ہے ۔ اس میں کچھ اضافہ کیجےے کیونکہ یہی خطوط ہی گذشتہ شمارے کے آئینہ دار ہوتے ہیں۔
سعدیہ بلوچ کا مختصر سا قطعہ طویل اور گہرے معنی رکھتا ہے۔ مختصر قطعہ کچھ یوں ہے۔
مَیں
تیرے عشق دی امام
بس تو نیّتاں نیت
باقی سارا میرے تے
غالب عرفان کی نظم پڑھنے سے تعلق رکھتی ہے۔ بہت اچھی نظم ہے جس میں ملت و قوم کی کم مائیگی کو عیاں کیا گیا ہے۔
آغا گل کے قصہ ” سونے میں اُگی بھوک“ کا انجام پسندآیا آغا گل صاحب نے بہت اچھا قصّہ بیان کیا ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ قصہ حقائق پہ مبنی ہے۔
غزل کے ساتھ ایک آزاد نظم بھی ” سنگت“ کے لےے حاضر ہے۔

وسلام
پروفیسر زُہیر کُنجاہی
راولپنڈی
———————————–
اسلام علیکم!

محترم ڈاکٹر شاہ محمد مری !
امید ہے کہ مزج گرامی بخیر ہوں گے اور دعا ہے کہ آپ سبز و آباد رہیں۔
عرض ہے کہ ماہنامہ سنگت نے اپنی انتھک محنتوں اور کاوشوں کے ساتھ اپنا اٹھارواں سال کا آغاز کیا ہے ۔ ماہتاک کے ہر شمارے میں ادب کا خاص رس ٹپک رہا ہے۔ معاشرے کے ہر پڑھے لکھے شخص کا فرض بنتا ہے کہ ا س معیاری رسالے کو خرید کر پڑھے اور خود کو آگاہ رکھے۔
ہمارے معاشرے میں ایک ادبی رسالہ انتہائی سستی قیمت میں ملنا ایک معجزہ ہے ۔ اس سے فائدہ اٹھائیں۔
    آپ کا مداح
شبیر شاکر
پیشکان، گوادر۔

———————————–

گہیں پُلیں مری

سلامت باتے
سنگتئے سنگتی آ عمر ئے مَزنّیں وہدے گوازینتہ، بر ے برے سنگتئے دیوانا اوں بہر زُورگہ مُوہ رَستہ ! نا بلدیں قلم ئے زباناگنگیں ھیالانا سرپدّی ئِ ہوار ہوار گہیں ڈاکٹر شاہ محمد مری ئِ مہرو آئی پگری بالادئے سیاہگ مئے وڑین رُوچئِ سرئے او شُتوکیں نوک باہندے ئِ ہاترا چہ کوہنگیں قلاتے آ کم نہ بُوتہ ۔ ڈاکٹر مری ئِ لبزانی تہا آئی ئِ عکس ئِ ہوار آئی تیوگین زنُد زندہ ضمیری گندگا کیت و سلامتیں۔ فقط گپّ گون مسیمّ ئَ کار داریت مئے دُعا ہمیش اِنت کہ پروردگار مری و مری ئِ دیوانا آئی پگری و مارشتی سیاہگا مُدّام مئے وڑین نا بلدانی سرا دائم بے رَکھّات ! پرچہ کہ اے وڑیں چاگردے ئِ مری ئِ پگرھما چراگہ وڑااِنت کہ بہ بیرکّیں پَٹےّ ئِ سمرا رُوک انت ۔ شے چراگا رُژنا رُژنا پگریں ورنا او بیلگامیں قلم ئِ واہند ءُ چاگردی سرد و گرمانی تبا چہ سر پدّین’ ’ عابد میر“ او عابد میرئے وڑین ایندگہ ورنا او نبشتہ کار واجہ وحید زہیر ، مزن مجگیں ” آغا گل صاحب“ دُور فہمیں اَثیر شاہوانی، امداد حسینی، درد واریں ظفر معراج ، ءُ دلداریں سرمد صہبائی ،محسن شکیل و علی بابا، ءُ مئے وڑیں دگہ چُنت نوک باہندیں تُنگ ، سنگتے عاقلین دیوانا سکین زُورانت او چاگردئے زُوراکیاں او نِزّور ئِ نزّورئیاں زند ئے آدینک ءَ پیشدارنت ، او چاگردئے تہا وتی وتی زندگ بُوہگ ئِ جار پِریّنت ۔ منی دُعا اِنت کہ اے وڑین بالا د و میمانا زندگی ئَ گرمین گواتے مہ لگات۔ اے پگرانی ساہگ مئے او مئے چاگرد ہ سرا سلامت بباتاں۔ آمین ۔ چوش کہ من سنگتہ سنگتی ئے گپا اتوں سنگتہ سنگتی آ نہ ایوکا زندو گندئے آدینک پیشداشت ۔ بلکیں چہ زندئے رموزاں سرپدّی او ایندگہ قوم و چاگردانی دیمتری ئے مسترین رابند ۔ ہمے رابندانی میم ، او دُور گندی ئے تہا مئے چاگردئے کِرد مارا پیشدارینت۔مارا دلجمی بکشات کہ مئے چَپ چاگردئے سرد گرمانی تہا مئے چاگردی کِرد وژنام اِنت ۔ آپگراگاں کماشیں عبداللہ جان جمالدینی دروشما بے بیت۔ یا کہ شیر کِن گفتاریں مری ئِ زبانا ” مانڑیں“ بے بنت! پہلی لُوٹاں کہ منی دوستین اِیگل پینا نیم راہا ہمراہ داری یلدات ۔ پرے ہاترا کہ منی بازارئے بہا بُووکیں ” رُژنائی“ سیائی اُوں چیزے ہوار انت ۔ ہو …….. بَلاّ بَنت قلم ئے سیاہی …. سیاہی واسیاہی ئے اِدّا اِسپّیتی کہ شیر اِنت ۔ آوں مرچاں بیدے چہ آپ ئِ ہواری دست نہ کیپت ! دل سکّ باز لُوٹیت کہ سنگتہ سنگتی سرا او ہاص ڈاکٹر شاہ محمد مری ئے ”بے چکاری“……..؟ سرا نشتہ بکاناں۔ بلیں ترسُیّت…….. کہ گنا ہے چہ قلم ئِ نِدا درّمہ کپّیت……..!
ہمے گنہگاریں قلم جہا ہے نبشتہ کنت ۔ ندر پہ مری صاحبا۔

عہد ئے آدینکا بِچّار
لبزانی منعا ئَ بمارّ
وہد ئِ تب ءِ نازُرکی ئَ سر پدّ ببو….!
تَچکّی ئَ پاد ئے چہ سر
رِلّی ئے کچّا بچاّر
باند ے پگرا، بل پہ باندا
مرچی ئے خیرا بُلوٹ!!
زند …….. زند پاہے مَرگ
مرگ اَستیں زندگی ئِ شریگداری بُوت کنت
مرگ مہ بُوتیں……..
زندگی اَت بیلگامہ تُربّڈاں !!

زرمبش بلوچ

زرمبش جان۔
تئی کاغذ اچھڑواے سببا چھاپ کنغایاں کہ تئی نثر باز زوراودیں۔ برکت باثی۔
”ایڈیٹر“

Check Also

jan-17-front-small-title

محمد رفیق مغیری ،جاوید زھیر

محترم ایڈیٹر آپ پر سلامتی ہو!۔ ٍ حسبِ روایت دسمبر کا سنگت معمول کے مطابق ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *