Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ » گلیلیوئے زیندھ ۔۔۔ بریخت ؍شان گل

گلیلیوئے زیندھ ۔۔۔ بریخت ؍شان گل

سارتی کہ اوچنڑانی ٹاھینغاپہ کیث۔ ہمے کل چیزاں گندی۔
سارتی:تہ مئیں بچا اے چے ھیل دیغئے ، استاد گیلیلی؟
گلیلیو:مں اشیا گندغا و ستا کنغاں۔
سارتی:کوٹو ہ اندرا ڈپیناناں!
آندریا: آئی‘ تہ چپا کں ۔ تہ اے ٹوکاں پوہ نہ وئے۔
سارتی: ہا‘مں پوھہ نہ واں‘ تہ پوہ بئے؟۔ جواں ۔(گلیلیو آیک پرچی اے داث) یک بھاگیائیں ورنائے اَشتہ ٹیوشنہ وانغا باڑائیں۔ جوائیں جرجانا انتی اور اے سفارشی چھٹی آڑتئی ۔استاد تہ تہ مئیں آندریا آ گنوخ کنئے۔ آنہیا ژہ یک روشے دواو دو پنچ گشائینئے۔تہ ہرچی کہ آنہیہ وستا کنئے آں گڈمڈ کنتی ۔زی بیگھا آں مئیں دیما جائی ثابت کنغا یہ کہ زمیں روشہ گڑدہ چری۔ آں پک بیثہ کہ کو پرنیکس نامیں مڑدے آ اے دریافت کثغث۔
آندریا: کو پرنیکسا ہمے دریافت نہ کثغث چہ استاد ؟۔ تہ وث آئیا حالادئے۔
سارتی:اڑے۔ جائی تہ اشیاہمے جخ ماریاں پڑھائینغائیے؟۔ کہ بلاں سکولا بروث ہمے کل ٹوکاں گشی اوہماں پادری بیئے گوں مں دانہی بی کہ اے کافری ٹوکاں کنغیں ۔ حیا آ کں استادگلیلی۔
گلیلیو:(نیرنڑا کناناں)سارتی مئے ریسرچہ نتیجہا ، اوباز تلخیں بحثا رند من و آندریا آ کڑدے ہمنگیں ٹوک دریافت کثغنت کہ دنیا آژہ دیردہ اَبدیں نہ ونت ۔ یک نوخیں روشیا ٹک داثہ۔ یک ہمنگیں زمانہے کہ آنہی اندرا زیندھ باز وہشی اے بی ۔
سارتی:خیر ۔ امیدیں کہ ہمے مزں شانیں زمانغہ لافاماشیر والا ئے زراں داثہ کنوں۔( چھٹی پلوا اشارہا کناناں) بس یک مہربانی اے کں، اشیا دِہ ریسیں نہ ۔مناں شیر ہ بل ئے گنڑتی ایں (روث)۔
گلیلیو:(کنداناں) کم از کم مناں شیر ہ ورغا تہ بل۔ (آندریاآ گوں) مطلب اشیں کہ مازی چیزے نہ چیزے سرپذبیثغوں۔
آندریا:مں تہ چھڑو ماثہ حیران کنغا پہ گو ئشتغہ ۔پر اے راست نَیں ۔مں کہ کرشی چکا نشتی ایثاں تہ تہ کرشی چرّینتہ، اے رنگا تہ نہ چرینتئے (دستہ چریناناں ڈسی) پچے کہ اغرتہ ہمنگا چرینتیں تہ مں کپتاں۔ تہ کرشی پُٹا ئی پچے نہ چرینتہ؟ اے خاطرا کہ اے ڈولا ثابت بی کہ اغر زمین چری تہ مں کفاں۔۔۔ ہیں ناں؟۔
گلیلیو: پر‘ مں تہ تئی دیما ثابت کثہ کہ۔۔۔۔
آندریا: پر دوشی تہ اے حقیقت مئیں دیما آتکہ کہ اغر زمین واقعی ہمنگا چرغا بیثیں تہ مں پُٹائی جکثیہ بیثاں۔
گلیلیو:(میز ہ چکا ژہ سیبی کنڑوئے زیرا ناں)۔ گند‘ اے زمینیں ۔
آندریا: ہمنگیں مثالاں گوں ہچی نہ وی استاد۔تہ ہمشاں گوں ہر چی کہ لوٹئے ثابت کثہ کنئے۔
گلیلیو: جواں، گڑہ بلی (سوفہ ایر کنت)۔
آندریا:گند نہ ، انسان اغر پوہینے بی تہ مثالاں گوں ہر چیزہ ثابت کثہ کنت۔ مں تہ ماثہ اے ڈولا کرشی چکا نندینتہ او کرشیہ چرینتہ نہ خناں چوکہ تہ مناں چرینتہ۔۔ اے خاطرا ہمے بریں مثالے۔ او اغر سیب دنیا فرض کنغ بہ بی گڑہ دِہ ہچ نہ وی ۔
گلیلیو:(کنداناں) برو برو‘ تہ پوہ بیغاباڑانہ یئے۔
آندریا : جواں۔ نیں سوفازیر مناں ڈس کہ شفا مں پُٹائیا پچے نہ جکثیاثاں؟۔
گلیلیو: جواں، گند ۔ اے دنیا ایں او تہ اشی چکا جکثیا یئے۔ (یک ککے زڑتو سوفا ٹمبثئی) او نیں گند ، زمیناچرغ شروع کثہ ۔
آندریا : نیں مں سغر ہ چکا اوشتا ثغاں۔
گلیلیو: شوں؟ ہیڑتیا گند۔ تا میں تئی سغر؟۔
آندریا :(سوفہ پلوا اشارہا کناناں) آنہیں‘ جھلا۔
گلیلیو: چے ؟(آں اغدہ سوفہ چرینی) تئی سغر ہماں اولی ہندا نَیں چہ ؟ تئی پاذ دانڑتی زمینہ چکا نہ ینت چہ ؟ مں کہ سوفہ چریناں تہ تہ انگا بئے چہ ؟(ککہ کشّی او پُٹا کنت سوفہ ٹمبیثی)۔
آندریا: نہ ۔۔۔ پر گڑہ مناں سما نہ کفی کہ زمین چرغیں؟ ۔
گلیلیو: اے خاطرا کہ تہ دِہ اشی پجیا چرغایئے۔ تہ او تئی پجیا چیاریں پلوانی ڈیھ و گواث ، او دراہیں زمیں گردِ شا کنغیں !۔
آندریا: گڑہ ہمنگا پچے معلوم بی کہ روش چرغیں؟۔
گلیلیو:(کک مانا تکغیں سوفہ اغدہ چرینی) نیں گند جھلا زمینا ‘آں یکو ہمرگابی ، تئی جھلا۔ او تئی جند ہ سما نہ کفی کہ آں چرّغیں۔ پر ، نیں تہ وثی بڑزا گند ۔ لیمپ تئی سغرہ چکیں۔ مں کہ زمینہ چریناں، تہ گند کہ تئی بڑزا ، سغر ہ بڑزا چے ناں؟۔ نیں تئی سغرہ چکا چے ناں؟۔ بڑزا ، بڑزا !
آندریا :(وثارچریناناں) اسٹوویں۔
گلیلیو: او لیمپ پکو ایں؟۔
آندریا : جھلا۔
گلیلیو: نیں پوہ بیثغئے ناں؟
آندریا : واہ۔۔۔ اے تہ باز جوانیں۔ ماث گندی تہ حیراں بی ۔
( لوڈ وویکومارسیلی‘ یک بھاگیائیں ورنائے پیہی)
گلیلیو: اے ہند تہ چیاررا ہے ٹھیثہ۔
لوڈو:سلامالیک۔ منی نام لوڈوویکو مارسیلی ایں۔
گلیلیو: (چھٹیا پڑھا ناں)۔ تہ ہالینڈ ہ نندے ؟۔
لوڈو:اوذا مں تئی باز تعریف اش کثہ‘ استاد گیلیلی۔
گلیلیو: کمپا نیا اندرا تئی خانوادہ ئے جائیدادنت ؟۔
لوڈو:مئیں ماث باڑائیں کہ مں دنیا آبہ گنداں۔ مں بلاں گنداں کہ دنیا لافا چے بیغیں؟۔
گلیلیو: اوتہ ہا لینڈا اش کثہ کہ مں اٹلی اندرا یاں؟۔
لوڈو: او منی ماثئے اے ارمان دِہ استیں کہ مں سائنسہ دنیا آ دہ گنداں۔ ہمے خاطرا ۔۔۔۔
گلیلیو:(آنہی ٹوک پیلہ بیغانہیشتئی) پرائیویٹ ٹیوشن ،دہ کلدار ماھئے۔
لوڈو: جی ہو ، جوانیں۔
گلیلیو:توتئی مشکو لائی چے اَنت؟۔
لاڈو:ماذن۔
گلیلیو:ہم م ۔
لوڈو:منی عقل علمہ پلوہ نہ روث‘ استاد گیلیلی۔
گلیلیو: گڑہ تہ ماھئے پانزدہ کلدار۔
لوڈو:ہو، جو انیں‘استاد۔
گلیلیو: مں ترا بانگھاں پگھئیاپڑھا ئیناں۔ اے تئی نقصان بی آندریا۔ ترانیں وانغ یلہ دیغی بی ۔ پوہ بیغا نہ؟ ۔ تہ پیسو ہ نہ ذی اَے ناں!۔
آندریا: جوانیں ، میں روغاں۔ سوفابراں؟۔
گلیلیو: ہو۔
( آندریا روث)
لوڈو: شمار مناں صبرا گوں پڑھائینغی بی ۔ خاص کں اے خاطر اکہ ہر چیزے کہ سلیمیں عقل گشی سائنس ہماں دگّہ نہ روث۔ مثال ‘ تہ ہماں احمقیں نلکیا گند کہ مرشی بانگھا ایمسٹرڈما بہا بیغیں ۔ مں اے نزیخاژہ دیثہ۔پوستہ ٹھیثغیں سوزیں پوش او دو لینز ۔ یکے چوشیں( دستہ اشار ہا گوں concaveبزاں نیاما ژہ بارغیں لینزے دروشمہ ٹاہینی ) او دوہمی چوشیں ( اشارہا گوںconvex بزاں نیاما ژہ ڈالائیں لینز ہ ٹاہینی) ۔مں اش کثہ کہ یکے کسن کنت ڈسی او دوہمی مزن۔ ہر پوھیں مڑدے سر پد بی کہ دوئیں یک دوہمی خاصیتا بے اثرکننت ۔غلط ‘اشی اندراژہ تہ ہر چیز پنچ ڈوڑ مزن گندغہ گیث ۔ تو ہمشیں شمئے سائنس۔
گلیلیو: ہر چیزے پنچ ڈوڑ مزن گندغہ کیث؟۔
لوڈو: چرچہ بُرج ،کہنی ۔۔۔۔ ہر چیزے کہ دِیر بی۔
گلیلیو: تہ وث دیثہ کہ چرچہ بُرج پنچ ڈوڑمزں بیثہ؟
لوڈو: جی ہواستاد۔
گلیلیو: او نلکی اندرا دو لینز اثنت۔( کاغذ ہ چکانقشہ اے کشی) اے رنگا اث ؟( لوڈو سغرہ جزرینی ہو کنت) چکھر کہنیں ہمے ایجاد؟۔
لوڈو:مں کہ ہالینڈا ژہ لڑثغاں تو ہمے ایجادا کمڑوروش بیثغہ، کم از کم بازارا تہ کمیں روش پیشا آتکغث۔
گلیلیو: (دروکا نرم بی ) جواں ،گڑہ تہ فزکسا گوں اکھر دلچسپی پچے دارئے؟ ماذناں پچے نہ پالئے ؟۔
( سارتی اندرا پیہی ، گلیلیو آنہیہ نہ غندی)
لوڈو:منی ماثہ خیالیں کہ کمڑ و سائنس دِہ ضروری ایں۔ گندناں‘ مروشاں تو سائنسہ ترمپے اوارکنغا بغر کس شرابہ دہِ نہ واڑت۔
گلیلیو: تہ یک زبانے ھیل گپتہ کنئے ، یا دینیات وانتے ثے ۔ آں ارزان اَث ( یکدم سارتیہ گندی) ۔بس ٹھیک ایں ۔ تہ سہ شنبہ ئے بانگھا بیا ( لوڈو در کفی روث)۔
گلیلیو:مناں چے آ ہیڑتیا گندغائیے ۔ مں تہ آں قبو ل کثہ۔
سارتی:اے سببا کہ تہ مناں وختہ چکا دیثہ ۔ یونیورسٹی ئے رجسٹرار تئی گندواناآتکہ۔
گلیلیو:اندرا بیاری۔اے ضروری ایں۔ آنہیا گوں گندوان کزیں پنچ صد کلدار ہ رسغہ موجب بی۔ گڑہ مناں پرائیویٹیں شاگردانی ہچ ضرورت نہ کفی۔
( سارتی رجسٹرارہ اندر ہ کاری ۔ گلیلیوآجرجانا کثغنت او کاغذ ہ چکا نقشہ آں ٹاھینغیں)۔ دشاتکئے! مناں یک کلدارے پوری دَئے۔ (رجسٹرار یک کلدارے داثی ۔ گلیلیو زیری سارتیہ داثی) ( سارتیا گوں ) آندریا آدیم دئے عینکہ دکانا ژہ اے دوشیشہ لوٹائیں۔شیشہانی ورداس ایشاں۔
( سارتی روث )
رجسٹرار: تہ ثی پگھار و دھینغو ہزار کلدار کنغا پہ کہ درخاست داثغث ، مں ہمے باروا آتکغاں ۔ مناں افسوسیں کہ مں یونیورسٹیہ ژہ تئی سفارشہ کثہ نہ خناں ۔ تراسمائیں کہ یونیورسٹی اندرا میتھہ شعبہ اکھر مشہور نَیں۔ ہمرگا پوہ بی کہ میتھ بے فائدہ ایں مضمونے ۔ اے ٹوک نَیں کہ مئے رپبلک اشیہ قدرہ نہ ذا۔ اے نہ تہ فلسفہ ڈولا ضروری ایں او نیں دینیاتہ ڈولا کار آمدیں ۔ ہا ، اشی وانغا گوں اشی شونقی ایں مخلوک باز وہش بی۔
گلیلیو:(کاغذ ہ چکا ڈولو بیثیا) ۔ منی دوست، پنچ صد کلدارا گوں مئیں گزارہ نہ وی۔
رجسٹرار : بلے استاد گلیلی ، تہ ہفتہ اندرا دودھکا دو دوگھنٹہ ای لیکچر اں دئیے ۔ وثی حد ازیات مشہوری سبباتہ ہمانکرکہ باڑا بئے ترا پرائیویٹ شاگرد رسنت کہ تراٹیوشن فیسہ داثہ کننت۔ گوئڑ تو ہمنگیں شاگرد نے چہ ؟۔
گلیلیو: بازنت ۔ ہر وخت پڑھائینغ ، ہر وخت پڑھا ئینغ ، گڑہ مئیں جند ہ پڑھغہ وخت تاں بی ؟۔ ھذا وث سئی ایں کہ مں اکھر مزائیں عالم فاضلے نہ یاں ہما نکر کہ فلسفہ ئے استاذاَنت۔ مں احمقے آں۔ مں ہچ پوھہ نہ واں ۔ہمے خاطرا مں وثی علمئے دڑتغیں پُشتیا اگڑ یانی جنغا پہ مجبور اں ۔ بلے مں ہمنگاتاں وختاکناں؟۔ مں ریسرچا تاں وختاکناں؟ واژہ ، منی سائنس دانڑتی علمئے شذی ایں۔ مزائیں سوالانی جواباں پہ دانڑتی گوئرما خیالی ٹوکاں سوا دوہمی ہچ نے۔ او ما لوٹوں ثبوتاں۔ گڑہ مں دیما شوں ودھاں وختیکہ لوغہ چلینغا پہ مناں کورمغزانی دماغہ اندرا اے ٹوک رُوساڑغی بی کہ دو متوازی ایں لیک ہچبر اوارنہ ونت ۔
رجسٹرار: بایدیں ہمے ٹوکا ہچبر مہ شموش کہ رپبلک تہ ترا ہمانکر زر داثہ نہ خنت کہ شہزاذغ دینت۔بلے آں ریسرچہ آزادی ءَ داث۔ پاڈوآ اندرا تہ ما پروٹسٹاں دِہ لیکچر ہ موکلہ دوں او آنہاں ڈاکٹریٹہ ڈگریاں دِہ د وں۔ ما استاد کریمونینی چرچہ عدالتہ دستانہ داثہ وھدیکہ مئے اگھا اے ثابت کنے جیثغہ کہ آں مذہبہ خلا فاٹو کاں کنت۔ ما تہ آنہی پگھار دِہ و دھینتغہ۔ہالینڈا داں اے ٹوک مشہوریں کہ وینس ہمنگیں رپبلکے کہ اوذا چرچہ عدالتہ حکم نہ چلّی۔ تہ تہ استار زانتے ئے۔ ترا تہ ہمے ٹوکہ خیال دارغ پہ کاریں پچے کہ تہ ہمنگیں علمے تحقیقا کنغایئے کہ آنہیا باز وختا ژہ چرچہ تعلیمانی عزت کنغ اِشتو داثہ۔
گلیلیو: پر شما تہ استاد برونو رومہ حوالہا کثہ چڑو اے سببا کہ آں کوپرنیکسہ تعلیماں تالاں کنغایث۔
رجسٹرار: جی نہ۔ کوپرنیکسہ تعلیمانی تالاں کنغا پہ نہ ۔۔۔ آنرنگا تہ کوپرنیکسہ تعلیم دِہ غلط او دروغنت بلے برونو ذمہ ما اے خاطرا نہ زڑتہ کہ آں وینسہ باشندہے نہ یہ۔ اے خاطرا اغر آں زیندغیا شوشے جیثہ تہ‘ تہ بایدیں نا حقا حجتا مہ خنئے۔ آنگا مں گوں تو عرضا کناں کہ تہ آزاد تہ استئے پر اکھر زور زورا ہمنگیں مڑدے ناما مہ گر، کہ چرچا لعنتی گوئشتہ۔اے کوٹو ہ اندرا دِہ نہ ، استاذ ، کوٹو ہ اندرا دِہ نہ۔
گلیلیو: شمئے فکر ہ آزادی ئے حفاظت بازفائدہ ئی کارے ۔ ہیں نا؟۔ اے ڈسّاناں کہ دوہمی ہنداں تہ چرچہ عدالتہ حکم چلی ‘ او مردم شوشے جابنت او ٹنگے جنت ،شمار جوائیں استاذ اڑزانیا دست کفنت۔ملّایانی عدالتا ژہ بھچا ئینغہ بدلہا، شما پگھار ہ باز کم دینت او فائدھہ کٹیں۔
رجسٹرار: بے انصافی ، بالکل ناجائز ۔ اگر شمار ہمنگیں خالی ایں وختا ژہ فائدہ رسی کہ آنہی لافا شوار یسرچ کثہ‘ او یک جاہلیں پادری اے آ شمئے فکر ہ سراپابندی جثہ تہ شمار چے فائدہ رسی؟ ہچ گلابے کنٹغاں سوا نہ وی استاد گلیلی ۔۔۔۔ او نَیں کہ شہزاذغ بے پادری بنت۔
گلیلیو: بلے ریسرچئے ہمنگیں آزادی ئے چے فائدہ کہ تہا اِش ریسرچا پہ وخت مہ رسی؟۔گڑہ نتیجہ آنی چے بی؟۔(کاغذانی یک بنڈلے پلوا اشارہا کنت) اے بیثہ بی کہ تہ سینٹہ ممبراں ’’گرے وٹی‘‘ ئے قانونہ سرامنی اے ریسر چاشون دئیے او شماہاں پولاکنئے کہ اے دروکا زیات کلدارئے حقدارنہ انت چہ ؟
رجسٹرار: اے تہ باز گراں بہا انت‘ استادگلیلی۔
گلیلیو: باز نہ۔ بس پنچ صد کلدار دگہ۔
رجسٹرار:کلدارہ بہا تو ہمکریں ہما نکر کہ تہ اشیا ژہ خرید کثہ کنئے۔ اغر ترا زرگزریں تو دوہمی چیزے ایجاد بہ کں۔ہماں علمے کہ تہ شوشکغایئے آنہی بولی دیوخ تو ہمانکر زرڈسی آنکر کہ آنہیانفع ملی۔ مثال، استاد کولمبیؔ ہماں فلسفہا کہ فلورنسہ اندرا بہاکنغیں شمانہیا شہزاد غ دہ ہزار کلدار سالئے کٹی۔ مں منّاں کہ تہ چیزانی جھلہ کفغہ اصول کہ دریافت کثہ آں باز مشہور بیثہ۔ پیرس و پراگہ اندرا تئی نام مشہوریں۔بلے پاڈو آ یونیورسٹی تئی قیمتا کہ دیغیں آں شمانہانی جیباں تہ نیاغیں۔ تئی بد قسمتی تئی شعبہ ایں، استاد گلیلی۔
گلیلیو: مں پوہ بیغاں ۔فری ٹریڈ۔ فری ریسرچ ،او ریسرچہ آزادیں واپار؟۔
رجسٹرار:تئی اشارہ تاں پلویں ؟۔ مں تئی چتروڑی ایں اشار ہا پوہ نہ ویثغاں۔ واپار اگھٹ مہ گنٹر ۔ دروکا درا گند، ہماں زنزیراں گند کہ شمانہاں علم بستی اَیں۔ ہماں چابکاں گند کہ کڑدے ہندا آنہانی شیرا علم نارغیں۔ ہموذا کس پوہ بیثہ نہ وی کہ سنگ پچے جھلاکفی ؟ اوذا تہ چھڑو ہماں ٹوک منغ بی کہ آنہی بارہا ارسطو آ چیزے لکھثہ۔ اوذا چم پٹ پولا نہ، چھڑو پہ پڑھغاٹہیثیا ینت۔ آنہاں چیزانی جھلہ کفغہ قانونہ پوہ بیغئے ہچ ضرورت نے ، ہموذ کہ فٹ بالہ قانون ہم زیات قدر دارنت۔انداز ہا کں کہ تئی خیال ہر چی کہ بے باک بی انت مئے رپبلک وہش و خوشیا قبول کنتش۔ ایذا، تہ ریسرچہ کثہ کنئے۔ مئے واپاری‘ گذانی جوائیں بھیراں ساڑ اینت کہ آنہاں فلورنٹینا آگوں مقابلہ کنغی۔ بلے آں تئی اے توار ہ دِہ مننت کہ فزکسا ترقی بہ بی ۔ سائنسہ احسان کار گھ ئے ترقی چکا تہ بازنت۔ مئے مزائیں مزائیں معتبریں مڑدم تئی ریسرچا دلگوش دارنت، گوئڑ تو کاینت او تئی ایجاداں گندنت۔۔۔۔ آں ہمنگیں جنٹلمین انت کہ وخت باز قیمتی این اش ۔۔۔ سوذا گریا ژہ بذمہ بر استاد گیلیلی! ایذا کسہ نہ بھامی کہ تئی کارا کمڑو دِہ حرج بیئے یا کسّے تئی کارہ اگھاڈھنگراں پیدا کنت۔ تہ اے ٹوکا من استاد، کہ کارہ تہ چھڑو ایذا کثہ کنئے۔

Check Also

jan-17-front-small-title

کڈک و مشک ۔۔۔۔ گوہر ملک

کڈکا یک روچے وتی دلا گشت اے درستیں زند پہ تنہائی نہ گوزیت،ما س وپتئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *