Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » نوحہ بلوچستان کا ۔۔۔ کشور ناہید

نوحہ بلوچستان کا ۔۔۔ کشور ناہید

قبائے شہرِ زرغوں
کیوں ترے دا من، تری گلیوں میں
افسردہ لہو بہتا ہی رہتا ہے
اٹھے ہیں ہاتھ ان کی فاتحہ پڑھنے
کہ جنکے نام سے واقف نہیں ہیں
اے مرے چلتن کی آزردہ ہواﺅ
تم نے تو لک پاس پہ بھی امن دیکھا تھا
ہزارہ بستیوں میں پھول دیکھے تھے
یہ کیسا ماتمی موسم ہے
خوں آشام صبحیں ہیں
دوپٹوں کی سفیدی، سرخ ہوتی جارہی ہے
کسی بھی آنکھ ہیں آنسو نہیں رکتے
جنازے سسکیوں ہی کا کفن پہنے
گزرتے جارہے ہےں
نہیں معلوم قاتل کون ہے
کسنے ہے لوٹا، امن،
میرے گھر دریچوں کا
کبھی جو مرثیہ لکھتے
انیس، آکے یہاں
قلم سے خوں ٹپکتا
اور آنکھیں پوچھتیں تم سے
مرے اے شہرِ زرغوں
کن بلاﺅں نے تجھے گھیرا ہوا ہے

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *