Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » نظم ۔۔۔ وصاف باسط

نظم ۔۔۔ وصاف باسط

نوحہءِ مات
آج میں اس سے دور جا رہا تھا
اسی سے
جس نے
میری راتوں میں
خوابوں کی کیلیں ٹھوکیں
میرے بستر کی سلوٹیں اور پیچیدہ کیں
میری خوشیوں میں غموں کا اضافہ کیا

آج میں اس سے دور جا رہا تھا
جس نے
مجھے انسان سے بھیڑیا بنادیا
اور مجھے دن بہ دن خود کو کھانے کی ریہرسل میں مصروف کر دیا
ہاں وہی
جس نے مجھے
کمزور کر کے
آسمان سے جنگ لڑنے پر آمادہ کیا
اور خود کو میرا خدا بنا دیا

ہاں
آج میں اس سے دور جانا چاہ رہا تھا
جس نے مجھے
پاس آنے کا ڈھنگ سکھایا
اور دور جانے کے معنی نہیں سکھائے

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *