Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » پوھوزانت » لٹ خانہ ئے لعل لڈزوشُتا ۔۔۔ محمد رفیق مغیری

لٹ خانہ ئے لعل لڈزوشُتا ۔۔۔ محمد رفیق مغیری

زیندغہ نیلی کلے حیوانا
مورسہدار جن وانسانا
جوانسال
ہر ساہدار رامو تئے برام چکھغی المی ایں۔مِرغ میارنیستیں۔ ہر کھسے کہ اے کوڑو یں جہانا آتکہ آنہی رایک نہ یک روچے ضرور روغی ایں۔ بھلے صد سال زیندغ بی گُڑہ دے آنہی راموتئے پیالہ ورغی ایں۔ لکھیں بادشاہ ولی او قطب و انبیا اے جہانا آتکو کوڑی واڑ تھووثی روچ پھیلو کھثو راہی بیثغاں ۔ اے جہان یک بازارے مِثل ایں کہ کئی مڑدم یک جھٹا آغاں توکئی مڑدم روغاں ۔ ہر کسار ایک روچے ضرور روغی ایں ۔مرچی آں شتابانگھا مار روغی ایں ۔ بس ایذا ہر کھس وثی بار وے انتظارا کھنغیں۔
لیکن چھی اے انسان ھمے رنگیں بیغاں کہ آں مڑتھودے زیندغنت۔ آنہارا مڑتغینانی تہا شمار نہ کھنغی بی۔ پرچھے کہ آنہاں وثی زندصرف وثی واسطا نہ گوازینتہ بلکہ آنہاں وثی زند و ثی جوانی وثی ہستی او نیستی صرف او صرف وثی راج وثی قوم وثی ماثیں وتن پہ قربان کُھزا ۔ آنہاں وثی زند نیا ما ہمے رنگیں عظیمیں کا روجُہد کُھزغاں کہ آں کاراں شہ راجا رامزیں فائدہ رستہ۔واجہ عبداللہ جان جمالدینی آ وثی زندگی آما بلوچ راجا پہ بلائیں کار او جُہد کُت غاں۔ خصوصاً بلوچی زبان و لبزانکئے باروا آں مڑدا جُہد کھسا شہ پوشیدہ نیستاں۔ ایشیاشہ علاوہ بلوچ راجا ما سیاسی شعور و جہد بیدار کھنغا پہ یک بلائیں تحریک لٹ خانہے ناما شروع کُت غاں۔ اے تحریک شروع کھنغا شہ پھیش واجہ وثی نوکری تحصیلداری وثی راج ئے واسطہ قربان کُت غا۔ پرچے کہ دنیا لافا ہما مڑدم عظیم گوشغئے لائق استاں کہ آں وثی زند دُھمی ایں واسطہ گوازینتغاں۔ ھمے ڈولا ملک و ریاستانی سرا حکمرانی کھنغے بجائے مڑدمانی دِلانی سرا حکمرانی کثغنت ۔حالانکہ مڑدیں دل و دماغہ سرا اثر کھنغ اِکھرآسانیں کارے نیستیں۔ لیکن یک راستیں و سچائیں مڑدوثی سچائی ئے زور را مڑدمیں دِلانی سرا اثر کت کنت۔ ہمے رنگیں سچائیں مڑدمیں سچائی ئے بازیں رنگ و دروشم است انت۔ یعنی نظریہ ئے سچائی سوچ و پِھکرئے سچائی دل و دماغ ئے سچائی نیت و ارادئے سچائی۔ ہروختے کہ انسانئے ہر فعلا ماں سچائی حدا شہ زیاز بی تو گُڑا آنہی سچائی مڑدمانی دلا ضرور تسخیر کنت۔ گُڑا مڑدم وث آنہی ئے مُرید بی آنا رونت۔ ھمے ڈولا واجہ ئے ہزاریں مڑدم مُریدا ست انت۔
’’ لٹ خانہ ‘‘تحریک تقریباً مارچ1950 شروع کثہ اے تحریکا واجہ گو بلوچستانئے بازنا مداریں شخصیت ھم کوفغ بیث غاں۔ ایشاں ما سائیں کمال خان شیرانی، سردار بہادر خان بنگلزئی، ڈاکٹر خدائیداد اگھی سنگتان اثنت۔ اے تحریک ئے اصل مقصد روشن خیالی، ترقی پسند سوچا، را دیما آرغ علم و ادبانوکیں خیالاں گوھم گرنچ کھنغ او بلوچ را جارا استحصالی قوتاں قید اشہ آزاد کھنغ استا۔ بہر حال اے تحریکا یک بلائیں فکری جُہد کثہ او مخلوقئے اندرا پختگی ئے آتکہ۔
شما گندے کہ بلوچی زبان و لبزانک اول اول واجہ ءِ جہدو کوشیشانی سببا یونیورسٹی سندھو آ شروع بیثہ او بلوچستان یونیورسٹی لا فا بلوچی ڈپارنمنٹئے آغاز ھم مامائے کوششاں شہ بیثہ کہ مروچی ہر بلوچ جوان زالبول وثی ماثیں زبانا ایم فل، پی ایچ ڈی، ڈگریاں گرغنت ۔اے کل ماما ئے مرحون منت ایں۔ من گوشاں کہ اے بلوچ راج سرا ماما ئے یک بلائیں احسانے۔ من گُشاں کہ ماما آ وثی پورا زندیک نیکیں سوچ یک جوانیں فکر ءِ اوروشن خیال نظریہ آ گو گوازینتہ۔ اوھمے نظریہ ئے شیرا آنہیا وثی راج وتن ئے اجتماعی بھلائی واسطہ جُہد کثہ۔ آنہیا نیکیں اِرادہ و پختہ ایں عزما گو و ھدو حالات ئے مقابلہ کثہ۔ وثی راج وتن سرا ظلم و زیادتی سرا دیثو کدی دِہ خاموش نہ بیثہ ۔ نتیجہ ئے پرواہ کھنغاثہ بغیر آنہی ہر وھدا حقئے آواز جابرہ دیما بلند گستا ۔ہمے وجہ آنہی کئی دفعہ وثی سرا سکی و سوری دیزغاں وطنا شہ بدر بیثہ گُڑدے وثی نظریہ و پھکراشہ یک قدمے دے پھدا نہ بیثہ۔ دنیائے سراستیں لعنتی ایں نظام سرمایہ داری فیوڈل ازم و ڈیرہ شاہی اے ہر وڑا مخالفت کثہ۔ ماماآ استحصالی قوتاں شہ سخت نفرت کثہ۔من گوشاں کہ مامائے بیران بیغا گو بلوچی زبان لبزانکہ تاریخ ئے یک عہدے بند بیثہ ۔بلوچ راجا را یک بلائیں نقصانے رستہ ۔نی بلوچ راجا جواناں پہ ائے حبرالمی ایں کہ آں ماما ئے نظریہ و پھکرا دیما برنت او آنہی سرا کار بند بینت ۔ہمے ڈولا وثی راجہ خدمتا کنت۔ ماما آ 19 ستمبر2016 روچا اے کوڑویں دنیا یل داتا ۔ حذا درا دعائیں کہ آنہی دیما آسان کنت۔

Check Also

March-17 sangat front small title

گوادر، ادب اور سمندر۔۔۔ فاطمہ حسن

گوادر جو کبھی اپنے خوب صورت، پُرسکون ساحلِ سمندر کی وجہ سے پہچانا جاتا تھا، ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *