Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ کرامت بخاری

غزل ۔۔۔ کرامت بخاری

مال حُسن تھا چشم حسود میں آیا
حدوں کو پار کیا تو حدود میں آیا
ہر اِک حصار سے باہر تھا زیست کا لمحہ
قضانے قید کیا تو قیودمیں آیا
جمالِ ماہِ منور کی آرزو لے کر
ستار ا شام کا شہرِ شہود میں آیا
زمانے بھر کی نگاہیں تھیں منتظر اُس کی
یونہی نہیں وہ عدم سے وجود میں آیا
مری نماز اِسی نقش سے ہوئی قائم
جبیں کا داغ جوذوق سجود میں آیا
کسی نظر کی کرامت ہوئی کرامت پر
میں اپنے نام کے صدقے نمود میں آیا

Check Also

jan-17-front-small-title

گوادر کے مچھیرے  ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

کبھی ہم مچھیرے تھے جال میں پھنسی چھوٹی مچھلیاں پانی میں واپس پھینک ان کے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *