Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ کرامت بخاری

غزل ۔۔۔ کرامت بخاری

زخم کھا کر بھی دُعا کرتے تھے
ایسے بھی لوگ ہوا کرتے تھے
سب کو آسانیاں دے کر پھر بھی
خود وہ مُشکل میں رہا کرتے تھے
ہائے وہ لوگ جو سچ کی خاطر
جھوٹ کو جھوٹ کہا کرتے تھے
ہاں وہی چاک گریباں والے
ہاں وہی لوگ وفا کرتے تھے
اب تو ہر شخص ولی ہے شاید
ہم تو انساں تھے خطا کرتے تھے
راہبر وراہِ محبت کتنے
روز رستے میں ملا کرتے تھے
اب اُنہیں ڈھونڈتا رہتا ہوں کہ جو
صبر کا درس دیا کرتے تھے

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *