Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ فیض محمد شیخ

غزل ۔۔۔ فیض محمد شیخ

میں اپنا جسم لیے پھرتا ہوں زمانے سے
یہ بوجھ کیسے اتاروں گا اپنے شانے سے

ہوا میں آج تری بے بسی پہ ہنستا ہوں
چراغ اور جلے ہیں ترے بجھانے سے

ہلا کے پاؤں کی زنجیر مسکراتا ہوں
میں کوئی ڈرتا نہیں تیرے قید خانے سے

سحر ہوئی تو مری آنکھ سے لہو ٹپکا
لپٹ کے رہ گئے سپنے مرے سرہانے سے

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *