Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل  ۔۔۔ فیصل ریحان

غزل  ۔۔۔ فیصل ریحان

دیکھ پانی میں سراپا میرا
خواب لے جاتا ہے دریا میرا

ہے یہ ویرانی کا منظر کیسا
کیا ہوا شہرِ تمنا میرا

رنج پہ رنج سہے جاتا ہے
درد،بیدرد ہے کتنا میرا

دیکھتا ہوں جو فلک کی جانب
کھو گیا ایک ستارا میرا

بچے اسکول چلے جاتے ہیں
صحن رہ جاتا ہے سُونا میرا

میں کہ سورج ہوں، ستاروں کی طرح
رات نے خواب نہ دیکھا میرا

دوستی ختم ہوئی ہے ، اچھا !
اب کبھی ذکرنہ کرنا میرا

رات بھر لگتی ہے اک بزم کہیں
دن گزر جاتا ہے تنہا میرا

زندگی داغ ہیں کیسے تجھ پر
آئنہ دیکھے نہ چہرا میرا

خاک ہو جائیں گے آخر ہم سب
نام رہ جاہے گا تیرا میرا

اسی امید پہ جیتا ہوں کہ اب
وقت آنے کو ہے اچھا میرا

ایک دن آئے گا ایسا میرا
لوگ دیکھیں گے تماشا میرا

Check Also

jan-17-front-small-title

گوادر کے مچھیرے  ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

کبھی ہم مچھیرے تھے جال میں پھنسی چھوٹی مچھلیاں پانی میں واپس پھینک ان کے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *