Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ ضیا بلوچ

غزل ۔۔۔ ضیا بلوچ

سینہِ پاک فراموشی سے
جا ملا خاکِ فراموشی سے
زاویہ درد کا دیکھا ہے کبھی سے
چشمِ ادراکِ فراموشی سے؟
کھینچ لیتا ہوں گلِ یاد کے رنگ
رگِ ہر تاکِ فراموشی سے
مل گیا لمحہِ نایاب مجھے
خس و خاشاکِ فراموشی سے
سلسلے موجِ تنفس کے چلے
دمِ شب ناکِ فراموشی سے
یاد بے شکل ہی نکلی آخر
گردشِ چاک فراموشی سے
بے اثر ہوگیا ہر زہرِ فراق
تیرے تریاقِ فراموشی سے
عکسِ ایام بھی اب ٹوٹ گیا
دستِ بے باکِ فراموشی سے
کون بچ پایا بجز آہوئے عشق
چشمِ فتراکِ فراموشی سے
دیکھتا رہتا ہے یہ کون ضیاؔ
درِ افلاکِ فراموشی سے

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *