Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ حماد نیازی

غزل ۔۔۔ حماد نیازی

یہ کس جنوں کا شرارہ لہو میں ڈھل آیا
بدن نے آہ بھری روح میں خلل آیا

ہمارے گھر میں سبھی لوگ خواب دیکھتے تھے
میں ایک خواب میں آیا تو بر محل آیا

میں اپنے باپ کے سینے سے پھول چنتا تھا
سو جب بھی سانس تھمی سیر کو نکل آیا

تجھے خبر ہی نہیں بارگاہِ حسن مآب
ترے حضور کوئی ایڑیوں کے بل آیا

ذرا سی دیر کو برسا وہ ابرِ دیرینہ
دھلی دھلائی جبینوں سے دن نکل آیا

بہارِ وقت نے خاشاک کر دیا حماد
خزاں کے دور میں جن شاخچوں پہ پھل آیا

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *