Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ حسن جمیل

غزل ۔۔۔ حسن جمیل

کوئی مکاں ہو تو خود کو مکیں کریں ہم لوگ
گماں کی بات پہ کیسے یقیں کریں ہم لوگ
وہ لا زوال نہیں ہے فنا کی زد میں ہے
سو ترک کس لیے دنیا و دیں کریں ہم لوگ
وہاں سے لوٹ کر آنا محال ہے اپنا
اگرچہ لاکھ غم واپسیں کریں ہم لوگ
بہت سے لوگ بہت دل نشیں سہی اے دوست
کسی کسی کو مگر ہم نشیں کریں ہم لوگ
حسن جمیل یہاں ابر کھل کے برسے گا
گنہ سے پاک جو اپنی زمیں کریں ہم لوگ

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *