Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل  ۔۔۔ انجیل صحیفہ

غزل  ۔۔۔ انجیل صحیفہ

میں خود کو خود مٹانا چاہتی ہوں
مگر تیرا بہانا چاہتی ہوں

مری آنکھوں کو آنسو دینے والے
میں اب تجھ کو رلانا چاہتی ہوں

یہ مانا ہاتھ تیرے ہاتھ میں ہے
مگر میں دل ملانا چاہتی ہوں

کسی بدلی میں اپنا تن چھپا کر
گگن کے پار جا نا چاہتی ہوں

ذرا پلکیں اٹھا کر راستہ دے
میں تیرے دل میں آنا چاہتی ہوں

تجھے اک بار تنہا چھوڑ کر میں
محبت آزمانا چاہتی ہوں

صحیفہ بن کے جب انجیل اتری
وہی منظر دکھانا چاہتی ہوں

Check Also

jan-17-front-small-title

گوادر کے مچھیرے  ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

کبھی ہم مچھیرے تھے جال میں پھنسی چھوٹی مچھلیاں پانی میں واپس پھینک ان کے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *