Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ انجیل صحیفہ

غزل ۔۔۔ انجیل صحیفہ

تمھاری اور ہماری ذات میں تحلیل ہوں گے
محبت کے سبھی منظر ابھی تبدیل ہوں گے
یہ نیلا زہر جب پت جھڑ کے پتوں میں گھلے گا
ہرے موسم محبت کے تبھی تشکیل ہوں گے
ہمیں خاموشیوں کو اور بھی سننا پڑے گا
تبھی جا کر تیری آ واز کی تمثیل ہوں گے
ہم اپنی خواہشوں کے سب گھروند ے پھونک دیں گے
ہماے گھر ہماری راہ قندیل ہوں گے
جہاں پر سات رنگوں کی دھنک نے آنکھ کھولی
وہیں سب ہاتھ مہروماہ کی زنبیل ہوں گے
میری آنکھوں کی ساری روشنائی بہہ گئی ہے
میرے صدمے اب اشکوں سے کہاں ترسیل ہوں گے
وہ قصے جو کسی انجام کی دہلیز پر ہیں
وہ قصے بھی محبت کی کبھی انجیل ہوں گے

Check Also

jan-17-front-small-title

گوادر کے مچھیرے  ۔۔۔ سلمیٰ جیلانی

کبھی ہم مچھیرے تھے جال میں پھنسی چھوٹی مچھلیاں پانی میں واپس پھینک ان کے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *