Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔ افضل مرادؔ

غزل ۔۔۔ افضل مرادؔ

غم کے لہجے کی ٹوٹی ہوئی چوڑیاں
میری آنکھوں میں چھبتی ہوئی چوڑیاں

زندگی کی کتابوں کے اک باب میں
دل کے بستے میں روٹھی ہوئی چوڑیاں

ایک رنگوں کا میلہ لگا جاتی ہیں
میرے رستے میں ٹوٹی ہوئی چوڑیاں

تیرے ہاتھوں کی نرمی سے کِھل جاتی ہے
پھول دستے پہ سمٹی ہوئی چوڑیاں

رات کے ایک پہر گونجتی ہیں بہت
میرے تکیے میں ٹوٹی ہوئی چوڑیاں

سب سے آگے رہیں اور زندہ رہیں
غم کے سہنے میں روتی ہوئی چوڑیاں

سب وصال آشنا لمس کے راز داں
میرے رستے میں بوتی ہوئی چوڑیاں

روز جاتا ہوں میں روز لاتا ہوں میں
غم کے میلے میں ٹوٹی ہوئی چوڑیاں

کس سے پوچھیں مرادؔ کون بتلائے گا
دل سہارے کی لوٹی ہوئی چوڑیاں

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *