Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » غزل ۔۔۔۔ اکرم خاور

غزل ۔۔۔۔ اکرم خاور

ادھار لیتے رہے عمر بھر بیگانوں سے

بہت سے سال گزارے انہی دیوانوں سے

نہ اپنے آپ سے کوئی حساب رکھا کبھی

نہ کچھ کہا اور نہ پوچھا ہے جانے والوں سے

درونِ شہربھی کلیاں مسل دی جاتی ہیں

ہمارے شہر کے حاکم بھی ہیں بیگانوں سے

چراغِ ہستی، تو اب گُل ہی ہو چکے جاناں

چراغِ سحر بھی گُل ہیں کئی زمانوں سے

میری نماز میں سجدے بھی اب نہیں آتے

میں چُور چُور ہوں ان موت کے اعلانوں سے

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *