Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شونگال » راستہ صاف ہوگیا کیا؟

راستہ صاف ہوگیا کیا؟

وقار، افتخار، عجز، تفکر، نظریہ، ایمان، استقلال، راست گوئی، اعتبار، وطن دوستی ،عہد پالی، بہادری اور عوامی یقین و اعتمادکا مجموعہ بوڑھا ،مر گیا۔اس نے بہت بڑی قیمت ادا کرکرکے یہ اوصاف برقرار رکھے تھے۔ سلیمان کوہ کی پوری لڑی نے اُس کے لےے برپاماتم کو برحق کہا، سُتکغیں شہر( ماوند) سے لے کر شہرِ سوختہ (ایرانی بلوچستان)تک بلوچ عوام سکتے میں آگئے، فہم و استدلال کی ڈکشنری ایک لمحے کو دھند لاگئی، کامن سنس کو جھٹکا لگا…….. بارشیں عدت میں گئیں۔
جان دینے والے دوستوں ، اور خون کے پیاسے دشمنوں سے بھرے خیر بخش مری کی موت بہت سے گھروں، قبروں کے لےے اطمینان کا باعث بھی رہی ہوگی ۔مگرہمارا دعویٰ ہے کہ جشن وہاں بھی کسی نے نہ منایا ہوگا کہ اُس کے اعلیٰ شخصی او صاف نے کسی بھی ضمیر کو ایسا کرنے نہ دیا ہوگا۔
دولتمندوں، اقتدار پرستوں اور قبضہ گروں کے خیال میں، انسانی آدرشوں کے ارزاں فروشوں کی راہ میں موجود سب سے بڑی رکاوٹ ہٹ گئی۔ خوش فہمی!
مگر یہ تو سادہ لوحی کی حد ہوگی۔ایک بت شکن قوم کے لئے بُتوں کے میلے لگانے کی خواہش کس قدر بچگانہ ہوگی؟۔ بلوچ عورتوں کو آسمان تک بلند دیواروں میں بند کرنے والوں کے لےے عبرت کہ بلوچ عورتیں، دیواریں، گلیاں پھلانگ آئیں، اور آکر نہ صرف جرا¿ت و وفا کو بزورِ بازو چھین لیا بلکہ اپنے کندھوں پہ بٹھا کر اُسے اپنے پاک نشیمن لے گئیں۔ تبھی معلوم پڑا کہ سفید ریش نے وطن کامستقبل سنوارنے کا فریضہ انہی کو ودیعت کردیا ۔
بلوچستان ‘ بلوچستان کے اندر براعظمی جڑیں پھیلا چکا تھا۔ موٹی ، گہری جڑیں۔ نظر آنے والی جڑیں ، نظر نہ آنے والی جڑیں ۔ اُسی کے متعین کردہ اہداف کے گرد طواف کےے بنا مستقبل کے سارے در‘بند ہیں کہ نوجوان انہی اہداف کے تابوت کو کوئٹہ ہاکی گراﺅنڈ سے چھین کر اُسے زندہ کتاب بنا چکے ہیں۔ اُس کی فکر ایک قوم کی تقدیر بن چکی ہے۔ اور تقدیر سے کون لڑ سکتا ہے۔
قطب کے ستارے سے کون نظریں ہٹا سکا ہے۔

 

Check Also

پاپولر افکار

چینکی ہوٹلوں، بیٹھکی محفلوں ،میلوں،ریڈیو، ٹی وی، اخبارات، اورفیس بک میں90 فیصد سے زائد لوگ ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *