Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » قصہ » بزغر نا مَسڑ ۔۔۔۔۔۔۔نورمحمد ترکئی/حمید عزیزآبادی

بزغر نا مَسڑ ۔۔۔۔۔۔۔نورمحمد ترکئی/حمید عزیزآبادی

بختاور دیرہ خلسہ خوشی او شاد کامی نا شعر تے پاریسہ کریکہ:۔
پگّہ عید مروءِ
رنگ ساز کنا پُچ آتے رنگ کروئے
ای لاڈی او لاڈ اُٹ
پُچ آتے کنا مون انگا رنگ نی ایتے
گواچنی ۔۔ پگّہ عید ئِ ، خلق ئنا ہر چنُکا بھلّا ک بھاز بے تامُلی ، تلوسی اَٹ عید نا انتظار ٹی اسُّر، چنُاک تینا دُوتیا ہنّام تخنگ اَٹ مشغول۔۔ ہر چنا اَندا کوشست ٹی اَس کہ کنا دُو تا تلف آک کُل آن زیات خیسُن جغری مریر، تاکہ پگّہ عید نا دئے کنا دُوک کل ئنا دُوتیان زیبا خننگر۔
بختاور نا باوہ ہرا تم حویلی ٹی پہیا تو بختاور دیرہ ئِ اسہ کنڈ آ تخا، دُدینگسہ تینا باوہ ئِ بانکُر کرئے تینا دُو تے اونا لخ ئٹی شاغا۔
باوہ جان ای داسا خان نا مَسڑ ئِ خناٹ اونا زلف آتے ٹی چاندی ءُ پیسہ نا لڑیک خُلوک اَسُّر ۔ باوہ جان ،خان نا مَسڑ بھاناز ءُ د ا لُائی اَٹ کنے پاریکہ کنا باوہ کن کِن اسہ ہار ئسے تون اوار کن کِن اسہ پھُلّی ئس ہم ہلکونے، باوہ جان خان نا مَسڑ عید ئنا دئے تینا ہار ءُ پُھّلی ئِ بینوئے تو امر جوان خننگو۔۔۔۔؟ باوہ جان اینو ہم نی کن کِن ہّچ ئس ہلتہ نُس، نی ساندہ پاسہ کہ ای نے کِن ہار ئس ہتوہ ولے اینو اسکان نا ہتوکا ہار ئِ ای خن تہ نُٹ، باوہ جان کنے جوان یات ئِ کہ نی ہمے دئے کنے پاریس نی اینو کچّہ غااِسپُست آتےا گزران کر پگّہ ای نے خولم نا اِرغ کنُفیوہ، ولے اینو ہم نا خِیری ہورک ئِ ، باوہ جان کنے اندُن لگھّگ کہ اینو ہم نے ہچ ئس دُو بتہ نے ۔ پا۔۔ باوہ جان ا لہ چُپ اُس۔۔؟
خان تو تینا چنُا تا بھاز جوان چِیٹ ءُ پامئِ کننگ ئِ اوتینا مَسڑ نا زلف آتے کِن چاندی نا لڑی اِسکان ہم اِیسُونے، اسہ نی اُس کہ کن کِن ہچ ئس ہم ہتپیسہ بختاور بھاز ارمانی اٹ پارئے، اے باوہ جان۔۔ انت ای نا مَسڑ افّٹ۔۔۔؟ بختاور نا دا ارمانی آ گپ آتےان باوہ نا خنک غلُغلو مسُّرکہ دا تِیوی آ دئے جدل خلّنگ آن پد ہم ای اوڑکِن ہنّام نا زرئس ہم ہتنگ کتوٹ ایلو کنڈآن دا معصوم نا ارمانی آ سوج آک ۔۔۔؟ بزغر بیخی ڈُکھّیا مرسا ( دُن کہ اُونا گُٹ ئٹی باخوئس الے) پارے ، کنا ہنین آ مَسڑ خان ئِ تو خدا تِسونے ، اُوڑ تون زِر ءُ دولت نا فراوانی گیِشتر ئِ اندا سبب ئِ کہ اوتینا مَسڑ کِن وڑ وڑ ئنا گِڑا تے اَتیک، ای ہراکان اَتیو۔۔۔؟
بختاور:۔ اودے خدا تِسونے، نے انتئہ تفک۔۔؟ بہ کان خدا ئِ پان کہ ننے ہم ایتے۔ باوہ ءُ مَسڑ اندا ہیت ءُ گپ آتے ٹی اسُّر کہ صاحب نا ،نائب خبر اف کہ ہراکان شپّارہ کرئے، اودئے خننگ تون بزغر نا آپاخ آک پرّینگار، او تینا جاگہ غا جِک بارِس ، وخ۔۔ (کاش) غریب ودی مفروسُس، دُنکہ ملخموت اُونا ساہ نا کوز کننگ کِن سلوک ئِ، صاحب نا نائب اُودئے نت ئنا لِتّر سرپند مرسا پارئے، نی ہم تینے مسلمان ئس پاسہ۔۔؟ نا وِیدن انتے کہ نی پین نا حق ئِ کِیرغ خلکونُس توسُن اُس۔۔؟ ہرا تم نما مڑدہ بے کفن مُریفوک اَس تو نی صاحب نا نت دُو آ تمّسہ پاریس کنے گِڑا نہ گِڑاس قرضدار کر ، داسا نا حالیت مچہ بھاز آب ٹی خننگ اِک تو نی تینے ڈھکنّگ ٹی اُس، اگر نا مَسڑ نا لحاظ خاطر متوکہ تو ای نے تون جوان ٹہا ٹہ، بزغر تینا لُغز آ بُت تون وَرندی ترسا پارئے، ای کس ئنا خون ئِ تو کتہ نُٹ کہ نی داخس کنے آ ترند مننگ اُس ، نی اِرا دئے کنے الّے ، عید خیر خوشی اٹ گدرینگے ، ایلو دا معصُوم نا لمُّہ نا کذیت ہم مُتکن متہ نے او داسکان تینا لمُّہ نا کذیہ نا غم تا پلویڑ ٹی ئِ ، عید آن پد اونا غمک ہم مچہ سُبک مریرہ، اوکان پد کنے ہرانگ کہ دِیس ای نے تون تُد مروٹ ، انت محنت ءُ خواری ئس کنے آن کرفوس ای ہڑتوما خن تے اٹ کاریم کننگ کن تیار اُٹ، کنا دا غم تا باریم کنا کوپہ غا تے آن دڑینگے، تاکہ دا نِزور آ جون مچّہ سُبک مرئے۔ صاحب نا نائب تینا خن تے پین خیسُن کریسہ ترند آ ہکّل تون پارئے شالہ اللہ نے توپ ئسے نا باءٹی کے،نی بھاز بھلُّو گنہگار سے اُس، نی اینخو نا سال نا لاب لائی نا باروٹ ننے ہچّو خبر چار ئس تتہ نُس، ننے بنا پاننگ آن کُل ئِ غلّہ غا تے وام دار آتے ٹی بشخ چانٹ کرینُس، ولے صاحب نے تون ہچّو وخت ئس خوڑت اُتّنے او کہئی وار نے تون مدت ءُ کمک کرسا بسُّونے، نے سختی نا وخت آ قڑض ہم تِسُّونے۔ ولے نی اودے اسُل گیرام کرینُس ، واہ اڑئے واہ بے انصاف ،لڑُوپا۔۔۔۔۔ پین ہیت نا گُرج اف، بہ کان کن تون صاحب نا خذمت ٹی حاضر مر، صاحب بھاز خدا ترس او انسان سے او نے تون اسُل خوڑت اُپّک کنے اُمیت ئِ کہ او نا، حق ئٹی گچینو فیصلہ ئس کرو،ناکوپہ غا تا ہرا باریم تخوکے او ہم سبک مریک، بہ کان کہ ہُرے تمّا۔
بزغر تینا جان خلاسی نا بھاز متّاماری کرئے ولے اونا ہر کوشست بے سوب مس، نیٹ بے وس مس بختاور ئِ سیال ئسے نا اُرا ٹی باہوٹ کننگ آن پد نائب تون تُد مس ، نائب نا حویلی ئِ سر مسُّر، نائب اودئے حویلی ٹی انتظار کننگ کِن جاگہ ئس تولیفے ، جیند تے صاحب نا تولوک جاہ اُرا ٹی پہیا ، نائب صاحب ئِ کُل حال حقیقت ئِ بنفے ، صاحب تینا نائب آن سوج کرسا ہکّل کرئے کہ نی اونا اُرانا جوان جاچے ہلکُس۔۔؟ دا بندغاک تینا قڑضدار آتا ہچّو وخت ئس پام ئِ کپّسہ تینا غلّہ غا تے ڈغار نا تل تے ٹی ڈھکّیرہ، اگر گڑاس لیپ ءُ کمبل ہم مرئے تو اوفتے ہم جاگہ ئس اودیم کیرہ، ولے اوڑے منہ مُتکنو لیپ ، مَش نا تال ئس ،اسہ ککُڑ ئسے آن بیدس گِڑاس بُد ءُ بلُونڈ ہرافے او ننکان بسترہ نا جاہ آ استعمال کیک نائب صاحب ئِ ورندی ترسا پارے، نائب تینا ہیت آتے مون مُستی برجا تخسہ پارے بزغر تون اسہ پین جوانو گِڑاس ئس ہم ارے ، اگر ای نے پاﺅ تو یخین اٹ نی بھاز خوش مروس، او گِڑا اونا مَسڑ ئِ اگہ کہ او داسکان مچّہ چنک ئِ ولے بھاز زیبائے، مَسڑ نا لمُّہ نا کذیہ ئِ مُسہ تُو مننگ ئِ ، اگہ خواجہ یات مروے کہ اونا کفن دفن جہہ ءُ جاگہ کِن بزغر نمے آن وام کریسُس ، نائب نا دا کُل ئِ ہیت آتے بننگ آن گُڈ ہکّل کرے پارے ، ہِن زُوئس خلق ئنا مولوی صاحب ئِ پا برے، بزغر ئِ ہم کناکنڈ آ راہی کر ۔
صاحب مولوی ئِ بیا بخیر کننگ آن گُڈ مولوی صاحب ئِ پارے ، نے تو مالُوم ئِ کہ کنا چار میکو زائیفہ دا ذُو تیٹ کذیت کرینے، اسہ دا بزغر ئِ کہ اونا اسہ مَسڑ ئس ارے، بزغر ئِ کنا وام تے ہم تروئی ئِ ،اگہ دا نیک انگا کاریم اٹ کنا مدت ءُ کمک ئِ کیس تو بھاز جوان مروئے، اندا ہیت گپ ٹی اسُّر کہ بزغر ہم نائب نا پد پدئٹ اُرا نا تہہ ٹی بس۔
صاحب تینا ملوکا مون تون بزغر ئِ پارے ، دا امرو مسلمانی ئسے کہ نی کنا داسکان کنا حق ئِ تننگ افّیس، مگہ کنا پیسہ غاک مفت ناﺅ۔۔؟۔ مولوی صاحب ، بزغر نا ہوش پام ئِ تیناتینا کنڈ آ کرسا پارے ” کتاب آتے ٹی نوشتہ ئِ کہ مومن مسلمان نا حق ئِ جوانو وڑئسے اٹ تننگ بھاز بھلُّو ثواب ئسے نا کاریم ئِ، دا نیک انگا کاریم قیامت نا دئے آ ہم انسان کن اسہ گچینو توشہ ئسے نا سبب مریک۔
اے بزغر۔۔۔! نی ملک صاحب نا ،حق ئِ اخّس کہ مرے زوت آن زو ادا کر ،نی دُنیا نا ڈُکھ ویل آتے آن ہم آجو مریسہ، آخرت ٹی ہم نے ہنین او برہم ئس دُو بریک، بزغر تینا لِخ ئِ تینا اڑتاماکوپہ غا تا نیامٹ کژریفسہ پارے کہ ای خدا نا سوغند ئِ ارفیوہ ، اینخو نا سال کنے آ کس ئس لنگار کریفنگ کن بتہ نے، انتئے کہ مالو آن ملک صاحب نا، نا ئب تینا وام تا وٹپ اٹ کنا خراس ئِ ہڑسانے خدا چائک کہ کنتون شام نا کنُنگ کن ہم اف۔
نا دا ہِیلہ ءُ بہانہ وَ نا دا درُوغ بُر ُ ہیت آک کنے آ ہچّو اثر کپّسہ، ای تینا پیسہ غاتے نے آن ہر حال ٹی خوائندار اُٹ، کن تون اسُل دا سا و انداڑے فیصلہ کر ، صاحب بش مرسا پارے ۔ دا رِدئٹ مولوی صاحب ءُ نائب تے تون ہیت گپ کیرہ، ای پین ہچ تپّرہ بس کنا قڑض آتے نے ہر حال اٹ نے تروئی ئِ ، اسُل داسا، انداڑے۔۔ نائب بزغر ئِ ہکّل ترسا پارے کہ نی صاحب نا نت دُو آ تموسُس، اودے منّت ءُ لیلاﺅ کروسُس، اودے منّت ءُ زاری کروسُس، اودے خدا نا درُہوئی تروسُس ۔۔۔ ، کن تون ہچّو مال مڈّی ئس اف، کنا ساہ ، کنا مَسڑ نا سدخہ اٹ۔ ” کن تون ہچ اف“ نا دا پاننگ آن مگہ نا قڑض آک خلاس مریرہ۔۔۔؟ مولوی صاحب تینے مون مُستی کرسا پارے، صاحب نا مٹ اف ، صاحب نہ بیرہ اسہ رحم دل ءُ شخص ئسے بلکہ تب اٹ اسہ سہ یار او انسان ئس ہم ارے، اونا نیکی کس تون کس تون گار مفک ، او کس ئنا قڑض ئِ تینا بجا اِلیپک، او اللہ نا کسر ٹی ہم خوش انگا اُست ٹی زخات ہم ہر سال ایتک، ای نے اسہ گچینو سلا ئس اِتیوہ کہ نی صاحب ئِ تینا پڑزند شریکی ٹی ارف، نی تینا مَسڑ ئِ اودئے ایت، اگہ نی کنا ہیت آ عمل کیس تو نا مَسڑ نا زندعزت ءُ پڑدہ ٹی تدینگک، او سیر ٹو پِڈ ئس ہم خنک اندا وڑئٹ نی غم تا باریم آن ہم سُبک مریسہ ۔
نائب بزغر دڑھکو ترسا پارے نن اڑتوماک دا کوشست ٹی اُن کہ صاحب ئِ وڑ ئنا وڑ ئسے اٹ امنّا کریفن ، ولے نی۔۔۔
اندا ہیت آک برجا اسُّر کہ صاحب نا منُشی کمرہ ٹی پیہنگ تون بزغر نا دُو ٹی تیوی او حساب کتاب ئس تس،ہراکہ مُسہ نیم ہزار روپئی بزغر نا ذی آ قڑض اسُّر، بےوس آ بزغر نیم گِلّوتہ غا مون تون پارے ، نمے آ خدا نا میھڑ ئِ ۔۔۔ ای تینا گنُگ دام ئِ مُسہ اپوک نا نیامٹ تِننگ خواپرہ ، دا شست سال نا پیر انگا ے امرتینا مَسڑ ئِ ایتو، ای دا کاریم ئِ کننگ کن تیار افّٹ ۔۔ آخا۔۔۔آخا۔۔، ای تینا مَسڑ ئِ خاخر نا چار ٹی دھکّہ تِننگ کپّرہ ، ای تینا چوری آ مَسڑ ئِ کور انگا دُون ٹی امر بٹیو۔۔۔؟ ایلو ہیت داد ئے کہ ای بیرہ دونزدہ نیم سد اوغانی روئپی قڑض الکوسٹ۔ ولے دا مُسہ نیم ہزارروئپی امر مسُّر۔۔۔؟
مُنشی ہکّل کرسا پارے ،الہ ۔۔ دا چاڑنڑدہ تُو نا نفع غاک ہرانگ ہنار۔۔۔؟ اے اللہ نا بندہ ۔۔۔! نی تینا نفع ءُ تاوان ےِ ہم پہُہ مفیسہ۔۔؟ نن نے سدّغا کسر آ شاغنگ نا کوشست ٹی اُن، مگر نی داسکان کسر آن چَپ اُس۔
مَسڑ نابرام تِننگ نا اِسٹام ئِ نوشتہ کرف، نکاح نامہ نا کاغد آ نوشتہ اس” ای اٹسجا، پام ءُ ہوش و شرعی وڑ ڈولٹ قول کیوہ“ دم جٹ تون بزغر ئِ امنّا کرفنگا، کاغد آ اُر (شست) نا نشان خلّنگا۔ مولوی صاحب تینا الار ( چوہارا) نا بشخ ئِ رومال ئسے آو¿تفے الّا سر ہلک۔
صاحب تینا نائب ئِ حکم ترسا پارے دھول دمامہ تو مَسڑ نا جن ئِ اتپیس، انتئے کہ او بزغر ئسے نا مَسڑ ئِ ، دا وڑ کننگ آن ایلو بزغرتے ٹی بےوسی نا گڑتیک تالان مریرہ۔ نی دُنکہ عید نا دئے اسہ پیرو بلّہ سے تون اوار مَسڑ ئِ تین تون تُد کبو، ہاں۔۔۔! خلق ئنا خان ئِ ہم بٹنگِرئے۔
سوب تون ہراسٹ عید نا خوشی آن گل بال اس، ولے بیوس آ بختاورتینا خدا سہی اس ، اودے پین ہچ خبر الو، اودے اُرا غا کشّار، اودے دلاسہ ترسا پاریر کہ نی اوغپہ، نن نے خولم نا ارغ کنفنہ نا نت ئِ کن لِتّر ہم الینہ، منہ وخت آن گُڈ دا بِننگ ٹی بس کہ بےوس آ بزغر دا کوڑی نا غم تے آن تینے تینٹ پاہو تس و دا کوڑی نا ڈکھ آتیان مدامی کِن آجو مس، اونا شُوم تخت آ مِسڑ بختاوربیرہ اندا سبب آن زند ئنا دئے تے تدیفیکہ، کہ دا ظالم تے آن تینا باوہ نا بیر ئِ الیو وَ تینا سینہ ٹی لگّھوکا خاخر ئِ پُدین کیو۔

 

Check Also

March-17 sangat front small title

یہ دنیا والے ۔۔۔ بابوعبدالرحمن کرد

(معلم۔ فروری 1951) مہ ناز ایک غریب بلوچ کی لڑکی تھی۔ وہ اکثر سنا کرتی ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *