Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » ادھورا ۔۔۔ عمران ثاقب

ادھورا ۔۔۔ عمران ثاقب

وقت نے جب سے جنم لیا ہے
تب ہی سے سب کو لاحق ہے
لمحے گننے کی بیماری
ہر پل بس گھڑیال سواری
دوڑ دھوپ بھاگم بھاگی میں
خود سے نہ ملنے کی فرصت
نہ ہی ٹہراؤ سے سنگت
نہ خاموشی سننے کی مہلت
لفظوں کے اوسان خطا سے
بے چینی ، باتوں میں عجلت
سنجیدہ چہروں پہ طے ہے
موزوں پل ہنسنے کی ساعت
سمے سُوئی نے سب کو دے دی
وقفوں میں جینے کی عادت

جنگل میں جب بھی جا کر مَیں
ٹکڑوں میں یہ بکھری بُدّھی
چُن چُن یکجا کر کے دیکھوں
آدھے پن کی اُنگلی سے پھر
روح کو اک چونٹی دوں سوچوں
وقت سے پہلے کا انساں بھی
کتنا پورا ہوتا ہوگا!

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *