Find the latest bookmaker offers available across all uk gambling sites www.bets.zone Read the reviews and compare sites to quickly discover the perfect account for you.
Home » شیرانی رلی » ابھی سے ہمت ہار ۔۔۔ سعدیہ بلوچ

ابھی سے ہمت ہار ۔۔۔ سعدیہ بلوچ

بیٹھے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ابھی سے ہمت ہار بیٹھے
ظلمتِ شب کی طوالت باقی ہے ابھی
چراغِ جبر و استبداد میں
آمریت کا ایندھن اُبل رہا ہے ابھی
ہاتھ شل ہیں؟
دم ٹھنڈے نکلے ہوئے ، سہمے ہوئے
کوئی ہوا ہی چلے
چراغِ جبر و استبداد کو ڈرانے کے لیے،
بجھانے کے لیے۔
میں تو بس یہ جانتی ہوں
کہ خورشیدِ سحرِ حر کو
آزادی کے ماتھے پر سجنا ہی ہوگا
ظلمتِ شب کا گریباں چاک کرکے۔
چلو اُٹھو!خورشیدِ سحر حُر کو
جبر کے سینے سے نوچ لاؤ،

Check Also

March-17 sangat front small title

نظم ۔۔۔ زہرا بختیاری نژاد/احمد شہریار

میں جبراً تم سے نفرت کروں گی تمہارے عشق سے میری زندگی کے حصے بخرے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *